ٹی وی چینل کے سٹوڈیو میں داخل ہونے والا مسلح شخص گرفتار

Image caption مسلح شخص شام کے مرکزی سٹوڈیو میں جانا چاہتا تھا لیکن گارڈ اس کو اس سٹوڈیو میں لے گیا جہاں سے بلیٹنز نشر کیے جا رہے تھے

نیدرلینڈز کے شہر ہلورسم میں ایک مسلح شخص کو ٹی وی چینل کے سٹوڈیو سے گرفتار کیا گیا جو سٹوڈیو میں داخل ہوا اور مطالبہ کیا کہ اس کو لائیو براڈکاسٹ میں وقت دیا جائے۔

ٹی وی چینل این او ایس کی عمارت میں خوش لباس نوجوان سٹوڈیو میں ادھر اُدھر پھرتا رہا اور اس کے ہاتھ میں پستول تھی جو کہ خالی لگ رہی تھی۔

سٹوڈیو میں جس وقت پولیس داخل ہوئی تو اس شخص نے پستول پھینک دی۔

اس شخص کا تعلق دا ہیگ کے قریبی قصبے سے ہے۔

جس وقت این او ایس کے سٹوڈیو میں مسلح شخص داخل ہوا تو اس وقت لائیو براڈکاسٹ چل رہی تھی۔ مسلح شخص کے داخل ہوتے ہی ٹی وی چینل پر ’صورتحال کے باعث براڈکاسٹ اس وقت معطل ہے‘ کا پیغام چلنا شروع ہو گیا۔

ابھی یہ واضح نہیں کہ اس شخص کا مقصد کیا تھا۔ تاہم اس نے سٹوڈیو میں داخل ہو کر کہا ’جو باتیں کہیں جائیں گی (خاموشی) ۔۔۔ یہ یہ بہت بڑی عالمی امور ہیں۔ ہمیں سکیورٹی سروسز نے ہائر کیا ہوا ہے۔‘

اس شخص نے مبینہ طور پر ٹی وی سٹاف کو ایک دھمکی آمیز خط بھی دیا جس میں بم اور سائیبر حملوں کی دھمکی دی گئی تھی اگر اس کو لائیو براڈکاسٹ سے ہٹایا گیا۔

امریکی خبر رساں ایجنسی اے پی کے مطابق ’جس نے رپورٹر نے اس شخص سے بات کی تھی ان کا کہنا ہے کہ اس شخص کا دعویٰ تھا کہ وہ ’ہیکرز کلیکٹو‘ (Hackers Collective) سے تعلق رکھتا ہے۔‘

ٹی وی چینل کی نشریات بحال ہونے کے بعد چینل نے مسلح شخص کی وہ ویڈیو دکھائی جس میں وہ سٹوڈیو میں ادھر ادھر ٹھل رہا تھا۔

این او ایس کے ڈائریکٹر کا کہنا ہے کہ مسلح شخص شام کے مرکزی سٹوڈیو میں جانا چاہتا تھا لیکن گارڈ اس کو اس سٹوڈیو میں لے گیا جہاں سے بلیٹنز نشر کیے جا رہے تھے۔

مسلح شخص نے کالا سوٹ، سفید شرٹ اور کالی ٹائی باندھ رکھی تھی۔

این او ایس کے ڈائریکٹر کے مطابق مسلح شخص کے کئی مطالبات تھے جن میں سے ایک تھا کہ اس کو براہِ راست نشریات میں دس منٹ کا وقت چاہیے۔