3 سالہ بچے کی گولی والدین کو جا لگی

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

اپنی ماں کے بیگ سے پستول نکال کر تین سالہ امریکی بچے نے ایک ہی گولی سے اپنے ماں باپ دونوں کو زخمی کر دیا۔

پولیس کے مطابق یہ واقعہ ریاست نیو میکسیکو کے ایک قصبے میں واقع ایک سرائے کے کمرے میں پیش آیا۔

پولیس کا خیال ہے کہ بچہ دراصل اپنی ماں کے ہینڈ بیگ سے آئی پیڈ نکالنے کی کوشش کر رہا تھا۔

پستول کی گولی بچے کے والد کے کولھے میں جا لگی اور پھر کولھے کو چیرتی ہوئی باہر نکلی اور پاس کھڑی ہوئی والدہ کے بازو میں جا لگی۔

دونوں والدین کی مرحم پٹی کر دی گئی ہے اور کہا جا رہا ہے کہ وہ دونوں رو بصحت ہیں۔

جب بچے نے گولی چلائی اس وقت اس کی دو سالہ بہن بھی ’بیسٹ ویلیو اِن‘ نامی موٹیل کے کمرے میں موجود تھی، تاہم وہ محفوظ رہی۔

این بی سی نیوز سے بات کرتے ہوئے جسٹن رینلڈز کا کہنا تھا کہ وہ اور ان کی گرل فرینڈ مونیکا اپنے لیے پیزا آرڈر کرنے ہی والے تھے کہ کمرا گولی کی آواز سے گونج اٹھا۔

’اگلے ہی لمحے میں کیا دیکھتا ہوں کہ میری گرل فرینڈ کے خون نکل رہا ہے۔ اس وقت جب میں بستر پر بیٹھا تو مجھے پتا چلا کہ میرے کولھے میں بھی گولی لگ چکی ہے۔‘

جسٹن رینلڈز نے بتایا کہ انھوں نے فوراً ایمرجنسی سروس والوں کو فون اور ان کے آنے سے پہلے تولیے کی مدد سے اپنی گرل فرینڈ کے بازو سے نکلنے والے خون کو روکنے کی کوشش شروع کر دی۔

’میں خود سے زیادہ اپنی گرل فرینڈ اور باقی چیزوں کے بارے میں پریشان تھا، یہاں تک کہ مجھے اپنے زخم کا احساس نہ ہوا۔ مجھ سب سے زیادہ فکر یہ ہوئی کہ میرے بیٹے نے خود کو زخمی تو نہیں کر لیا۔وہ شدید خوفزدہ ہوگیا تھا اور زور زور سے چلا رہا تھا۔ سارا منظر بڑا خوفناک تھا۔‘

بچے کے والد کو ہسپتال سے فارغ کر دیا گیا ہے جبکہ ان کی گرل فرینڈ کی حالت بھی خطرے سے باہر ہے۔

اس بات کا فیصلہ نیو میکسیکو کے مذکورہ قصبے کا ضلعی اٹارنی آفس کرے گا کہ آیا والدین کے خلاف غفلت برتنے کا مقدمہ چلایا جائے گا یا نہیں۔واقعے کے بعد سے بچوں کو سرکاری تحویل میں لے لیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ دسمبر میں امریکی ریاست اڈاہو میں ایک خاتون اس وقت ہلاک ہو گئی تھی جب وہ اپنے دو سالہ بچے کے ہمراہ ایک شاپنگ مال میں خریداری کر رہی تھی اور بچے کے ہاتھ سے وہ پستول چل گیا تھا جو خاتون نے اپنے ہینڈ بیگ میں رکھا ہوا تھا۔

اسی بارے میں