معمر خاتون چینی بھول گئیں انگریزی نہیں

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption ٹی وی پر ان کو ہسپتال میں بستر پر لیٹے ہوے انگریزی میں باتیں کرتے ہوئے دیکھایا گیا ہے۔

اطلات کے مطابق چین میں ایک معمر خاتون فالج کے حملے کے بعد اپنی مادری زبان بھول گئی ہیں اور صرف انگریزی زبان بول رہی ہیں۔

مقامی ٹی وی ’ہونن‘ نے رپورٹ کیا ہے کہ 94 سالہ سابق انگریزی کی استاد ’لی جائیو‘ کا بولنے سے متعلقہ دماغ کا حصہ فالج سے متاثر ہوا ہے۔

ٹی وی پر ان کو ہسپتال میں بستر پر لیٹے ہوے انگریزی میں باتیں کرتے ہوئے دکھایا گیا ہے جس کا مطلب ہے کہ ہسپتال کے عملے کو اپنی انگریزی بہتر کرنا پڑے گی۔

ہونن ٹی وی سے بات کرتے ہوئے ایک نرس کا کہنا تھا کہ ’وہ مجھے صبح انگریزی میں سلام کرتی ہیں اور دوپہر کو کھانے کے بعد بھی وہ انگریزی زبان کا ہی استعمال کرتی ہیں، میری انگریزی اتنی اچھی نہیں ہے اس لیے کبھی مجھے ان کی باتیں سمجھ نہیں آتیں۔‘

ہسپتال میں کام کر نے والے ’لی فن ینگ‘ نامی ایک ڈاکٹر کا کہنا تھا کہ ’ فالج سے لی جائیو کا پورا جسم متاثر ہوا ہے اور ایسا لگتا ہے کہ ان کے دماغ کے اس حصے کو نقصان پہنچا ہے جس کی مدد سے وہ مادری زبان بولتی تھیں لیکن وہ حصہ جو انگریزی کے لیے ذمہ دار ہے متاثر نہیں ہوا۔‘

خیال رہے کہ فالج یا صدمے کے بعد مریضوں کے مختلف تلفظ کے ساتھ بولنے کے واقعات پہلے بھی رونما ہوچکے ہیں مگر مادری زبان چھوڑ کر کسی اور زبان کا استعمال شروع کردینے کا یہ اپنی نوعیت کا منفرد واقعہ ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ اس کی ایک وجہ یہ بھی ہوسکتی ہے کہ انگریزی بولنے کے لیے دماغ کا صرف ایک حصہ استعمال ہوتا ہے جبکہ پیچیدہ چینی زبان کے لیے دماغ کے دونوں حصے استعمال ہوتے ہیں۔

اسی بارے میں