برطانیہ میں جوہری بنکر نیلامی کے لیے پیش

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

برطانیہ کے علاقے ناٹنگھم شائر میں سرد جنگ کے زمانے کے ایک جوہری بنکر کو نیلامی کے لیے پیش کیا گیا ہے۔

اس زیرِ زمین جوہری بنکر کو اس وقت کی سویت یونین اور مغربی ممالک کے درمیان تناؤ کے بعد سنہ 1961 میں بنایا گیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

اس بنکر کو نیلام کرنے والے رچرڈ گاڈ نے بتایا کہ چھوٹے کمروں پر مشتمل اس بنکر کو چار میٹر تک زیرِ زمین رکھا گیا تھا تاہم سنہ 1991 میں اسے بند کر دیا گیا تھا۔

انھوں نے بتایا کہ اس بنکر میں چار افراد کے رہنے کی گنجائش ہے۔

رچرڈ گاڈ کے مطابق ’ایسا بنکر آرام دہ نہیں ہوتا لیکن اس میں افراد کو رہنا پڑتا تھا۔ یہ بنکر آرام کے لیے نہیں بنایا گیا تھا بلکہ ایک مقصد کے لیے بنایا گیا تھا۔‘

انھوں نے بتایا کہ اس کا مقصد جوہری حملے کی صورت میں اس کے اثرات کا جائزہ لینا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

اس بنکر کو رائل آبزورز رجمنٹ نے ناٹنگھم شائر کے ایک گاؤں برٹن جوائس میں دیوارِ برلن کی تعمیر کے دوران بنایا تھا۔

رائل آبزرور رجمنٹ نے 1956 اور 1965 کے دوران ملک بھر میں 1500 سے زیادہ نگراں پوسٹیں قائم کی تھیں۔

سبٹرینا بریٹانیکاسوسائٹی میگزین کے مدیر نک کیٹفرڈ کا کہنا ہے کہ جوہری دھماکے کی صورت میں اس کے اثرات کا جائزہ لینے کے لیے بنکر میں افراد موجود تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

اس بنکر کو نیلام کرنے والے رچرڈ گاڈ نے بتایا کہ نگرانی کرنے والے عملے کا آخری اہلکار سنہ 1991 میں اس بنکر سے چلا گیا اور کئی برس گزرنے کے باوجود لوگ اس بنکر میں آتے جاتے رہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

اس بنکر کو نیلام کرنے والے منتظمین نے اس کی قیمت 75,000 برطانوی پاؤنڈ مقرر کی ہے۔

رچرڈ گاڈ کے مطابق جنگ کے لیے سرگرم افراد کے لیے یہ نیلامی پرکشش ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

ان کا کہنا تھا کہ بنکر کی نیلامی خریداروں کو تاریخ کا ٹکڑا خریدنے کا موقع فراہم کر رہی ہے۔