چیف کی تصاویر والے ٹوائلٹ رول ضبط

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption ہانگ کانگ کے چیف ایگزیکٹو لیونگ عوام میں خاصے غیر مقبول ہیں۔

چینی حکام نے 7 ہزار ٹوائلٹ رول اور 20 ہزار ٹشو کے پیکٹ پکڑے ہیں جن پر ہانگ کانگ کے چیف ایگزیکٹو ’سی وائی لیونگ‘ کی تصویر چھپی ہوئی تھی۔

ہانگ کانگ کی ڈیموکریٹک پارٹی نے جو ان ٹشو کے پیکٹوں کو اگلے ہفتے ہونے والے ایک میلے میں بیچنا چاہتی تھی، حکام کی جانب سے ان کو قبضے میں لینے کو اظہار رائے کی آزادی کی خلاف ورزی قرار دیا ہے۔

ٹشو کے پیکٹ جمعے کے روز چین میں ایک فیکٹری سے ضبط کیے گئے۔

ہانگ کانگ کے چیف ایگزیکٹو لیونگ عوام میں خاصے غیر مقبول ہیں اور حالیہ برسوں میں ان کا مذاق اڑانے والی اس طرح کی مصنوعات بڑی تعداد میں بکی ہیں۔

ضبط کیےگئے ٹشوں پر چین کے حمایت یافتہ لیڈر کے متعلق مخلتف تضحیک آمیز پیغامات لکھے ہوئے تھے۔

ڈیموکریٹک پارٹی کاکہنا ہے کہ پچھلے سال ہانگ کانگ میں منعقد کیے جانے والے سالانہ نئے سال کے میلے میں تمام ٹشو فروخت ہو گئے تھے اور پارٹی اس سال بھی مصنوعات بیچ کر فنڈ جمع کرنے کا ارادہ رکھتی تھی۔

پارٹی کے نائب چیئرمین ’لو کن ہئی‘ کے مطابق بارہ ہزار ڈالر مالیت کا سامان بغیر کوئی وجہ بتائے ضبط کر لیا گیا ہے۔

دوسری جانب چینی حکام نے معاملے پر خاموشی اختیار کی ہوئی ہے۔

خیال رہے کہ گزشتہ سال ہانگ کانگ میں جمہوری اصلاحات کے حق میں نکالے گئے مظاہروں میں ہزاروں افراد نے شرکت کی تھی۔

چین نے 2017 میں چیف ایگزیکٹو کے عہدے کے لئے براہ راست انتخابات کا وعدہ کیا ہے لیکن ساتھ یہ شرط بھی لگائی ہے کہ امیدواروں کی اہلیت کا فیصلہ چینی حکام خود کریں گے۔

بیجنگ کی اس شرط پر ہانگ کانگ کے سیاسی کارکنوں میں اشتعال پایا جاتا ہے۔

اسی بارے میں