کیپٹل ہل بلڈنگ کو فائرنگ کے بعد بند کر دیا گیا

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption سنہ 2013 میں ایک خاتون نے اپنی کار کو وائٹ ہاؤس کے سکیورٹی گیٹ سے گذارنے کی کوشش کی تھی تاہم اس خاتون کا پیچھا کر کے اسے ہلاک کر دیا گیا تھا

امریکی ریاست واشنگٹن میں کیپٹل ہل بلڈنگ کے باہر خود کو گولی مار کر زخمی کرنے والے مسلح شخص کی فائرنگ کے بعد کیپٹل ہل بلڈنگ دوگھنٹے تک بند رہی۔

پولیس نے یہ حفاظتی اقدام کیپٹل ہل بلڈنگ کے قریب گولیوں کی آواز آنے کے بعد اٹھایا۔

پولیس اس مشتبہ گٹھڑی کی بھی تفتیش کر رہی ہے جس کے بارے میں خیال ظاہر کیا جا رہا ہے کہ وہ مسلح شخص کے سوٹ کیس کے ساتھ تھی۔

امریکی کانگریس کا اجلاس نہ ہونے کی وجہ سے چند نمائندگان ہی شہر میں موجود تھے۔

اطلاعات کے مطابق واقعے کے بعد کیپٹل ہل بلڈنگ کے اندر رہنے والوں سے وہیں ٹھہرنے کا کیا گیا۔

کیپٹل پولیس کی خاتون ترجمان کمبرلی شنائیڈر نے ایک بیان میں اس واقعے کی تصدیق کی کہ مشتبہ شخص نے فائرنگ کی۔

پولیس کے مطابق کیپٹل ہل بلڈنگ کے قریب واقع گلیوں کو بند کر گیا جبکہ اس واقعے کی مزید تفتیش جاری ہے۔

خیال رہے کہ سنہ 2013 میں ایک خاتون نے اپنی کار کو وائٹ ہاؤس کے سکیورٹی گیٹ سے گذارنے کی کوشش کی تھی تاہم اس خاتون کا پیچھا کر کے اسے ہلاک کر دیا گیا تھا۔