ٹائٹینک جہاز کی قیمتی کرسی کی نیلامی

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption میکی بینٹ جہاز کے کاغذی ریکارڈ کے مطابق اس طرح کی چھ یا سات کرسیاں ملی تھیں

ٹائٹینک جہاز کے عرشے پر استعمال ہونے والی ایک کرسی 80 ہزار برطانوی پاونڈ تک نیلام ہونے کی امید ہے۔

لکڑی کی یہ کرسی سنہ 1912 میں ڈوبنے والےبحری جہاز ٹائٹینک کے درجہ اول عرشے پر استعمال ہو رہی تھی۔

نیلامی کرنے والے اینڈریو ایلڈریج کا کہنا ہے ’ ٹائٹینک جہاز کی نیلام ہونے والی چیزوں میں سے یہ اپنی نوعیت کی منفرد چیز ہے، اور اس کی اصلیت ثابت کرنے کے لیے کاغذات بھی موجود ہیں۔‘

واضع رہے کہ 18 اپریل کو نیلامی کے لیے پیش کی جانے والی یہ کرسی جسے انتہائی احتیاط سے محفوظ کیا گیا ہے اتنی نازک ہے کہ اس پر بیٹھا نہیں جاسکتا۔

لکڑی کی اس کرسی کو میکی بینٹ نامی جہاز کے عملے نے اٹھایا تھا، جسے ٹائٹینک کے حادثے میں مرنے والوں کی لاشوں کی تلاش کے لیے بھیجاگیا تھا۔

میکی بینٹ جہاز کے کاغذی ریکارڈ کے مطابق اس طرح کی چھ یا سات کرسیاں ملی تھیں۔

اینڈریو ایلڈریج کے مطابق شاید یہ کرسی فرانسیسی کپتان جولین لیمارٹیلیر کو میکی بینٹ کے عملے کے کسی رکن کی جانب سے دی گئی تھی۔

ان کا کہنا ہے ’ سنہ 1912 سے کپتان جولین لیمارٹیلیر کی ملکیت سے لے کر اس کے حالیہ مالک تک کے دستاویزی ثبوت موجود ہیں۔‘

اس کرسی کے حالیہ مالک ایک برطانوی شہری ہیں جن کے پاس یہ کرسی گذشتہ 15 سال سے ہے۔

واضع رہے کہ ٹائٹینک امریکہ سے برطانیہ جاتے ہوئے 14 اپریل سنہ 1912 کو ایک برفانی تودے سے ٹکرانے کے بعد ڈوب گیا تھا اور اس حادثے میں تقریباً 1500 افراد ہلاک ہوئے تھے۔

اسی بارے میں