دس چیزیں جن سے ہم گذشتہ ہفتے لاعلم تھے

تصویر کے کاپی رائٹ THINKSTOCK
Image caption پیزا کے بارے میں پہلی بار تفصیل کے ساتھ نیویارک ٹائمز نے بتایا تھا

1۔ صبح کو روانہ کیے جانے والے ای میلز کے نسبتا طویل جواب آتے ہیں۔

مزید معلومات کے لیے پڑھیے

2۔ سنہ 1944 کےستمبر میں پہلی بار تفصیل کے ساتھ نیویارک ٹائمز نے پیزا کے بارے میں بتاتے ہوئے اس کا جمع پیزے بتایا تھا۔

مزید معلومات کے لیے پڑھیے

3۔ ریوالور اور پستول کی گولیاں بعض اوقات ایرماڈیلو نامی جانور کی کھال سے ٹکراکر واپس ہو جاتی ہیں۔

مزید معلومات کے لیے پڑھیے

4۔ ملکۂ برطانیہ لنچ سے پہلے کا اپنا گن اور ڈبونٹ بی بی سی ٹو کے پروگرام دی ڈیلی پولیٹکس کو دیکھتے ہوئے لیتی ہیں۔

مزید معلومات کے لیے پڑھیے

5۔ ایلن رک مین نے رابن ہڈ: پرنس آف تھیوز فلم کے لیے اپنے مکالمے کو دوبارہ اپنے دوست پیٹر بارنس سے لکھوایا جو اس طرح سامنے آیا: تم۔ میرے کمرے۔ آج رات ساڑھے دس بجے۔ تم پونے گیارہ بجے۔ اور ایک دوست کو بلاؤ۔

مزید معلومات کے لیے پڑھیے

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption آرمیڈیلو امریکہ پایا جانے والا ایک جاندار ہے جس کی کھال انتہائی سخت ہوتی ہے

6۔ مینیسوٹا میں ریاستی سینیٹروں کو سینیٹ میں ایک دوسرے سے نظریں ملانے کی اجازت نہیں۔

مزید معلومات کے لیے پڑھیے

7۔ انگلینڈ کی کسی بھی پارلیمانی انتخابی حلقوں میں جنوبی ڈربی شائر ایسا حلقہ ہے جہاں سماجی اختلاط سب سے کم ہے۔

مزید معلومات کے لیے پڑھیے

8۔ یونیورسٹی چیلنچ کے لیے سوالات بنانے والوں کا میلان بطور خاص پری رفائلٹ پینٹنگز کے بارے میں ہوتا ہے۔

مزید معلومات کے لیے پڑھیے

9۔ اگر آن لائن صفحہ کسی دلکش خاتون کے لیے ہو تو مرد ایک دوسرے سے زیادہ ڈونیشن دینے کی کوشش کرتے۔

مزید معلومات کے لیے پڑھیے

10۔ سموتھینین انسٹی ٹیوٹ کی جانب سے منعقد علم طبیعیات کے جدید کلکشن کی نمائش میں آئنسٹائن کا پائپ سے مقبول کلکشن ہے۔

مزید معلومات کے لیے پڑھیے

اسی بارے میں