سینیگال کا سعودی عرب میں فوج بھیجنے کا اعلان

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption سینیگال پہلا غیر عرب ملک ہے جس نے اپنی فوج سعودی عرب کی مدد کے لیے بھیجنے کا اعلان کیا ہے

افریقی ملک سینیگال نےسعودی عرب کی درخواست پر حوثی باغیوں کے خلاف کارروائی میں مصروف عرب اتحاد کی مدد کے لیے دو ہزار سے زیادہ فوجی سعودی عرب بھیجنے کا اعلان کیا ہے۔

سینیگال پہلا غیر عرب ملک ہے جس نے اپنی فوج سعودی عرب کی مدد کے لیے بھیجنے کا فیصلہ کیا ہے۔

سعودی عرب نے سینیگال کے صدر میکے سال کے گذشتہ ماہ سعودی عرب کے دورے کے دوران فوجی مدد مانگی تھی۔ سینیگال بھی سعودی عرب کی طرح ایک سنی ملک ہے اور سعودی عرب نے اسے حالیہ برسوں میں کافی امداد دی ہے۔

ادھر اقوام متحدہ نے سعودی عرب کی سربراہی میں قائم عرب ممالک کے اتحاد پر زور دیا ہے کہ وہ یمن کے شہر صنعا میں بمباری بند کرے۔

اقوام متحدہ کے انسانی فلاح کے ادارے یوہانس ڈر کالاو نے کہا کہ صنعا کا ایئرپورٹ یمن میں پھنسے ہوئے لوگوں کو نکالنے اور وہاں امداد پہنچانے کے لیے انتہائی اہمیت کا حامل ہے لیکن اب اس کی حالت اتنی خراب ہو چکی ہے کہ اب وہ قابل استعمال نہیں رہا۔ اقوام متحدہ کے اہلکار نے کہا کہ صنعا کے ایئرپورٹ کو قابل استعمال بنانے کے لیے اس کی مرمت کرنے کی ضرورت ہو گی۔

اقوام متحدہ نے کہا ہے کہ ملک میں ایندھن کی کمی کی وجہ سے یمن میں امدادی کارروائیوں میں مصروف اداروں کے لیے اپنا کام جاری رکھنا مشکل ہو گیا ہے۔

ادھر سعودی عرب کے وزیر خارجہ الجوبیر نے عندیہ دیا ہے کہ سعودی سربراہی میں عرب ممالک کا اتحاد یمن میں امدادی سامان پہنچانے کے لیے اپنے حملوں روکنے پر غور کر رہا ہے۔

پیر کے روز سعودی عرب اور اس کے اتحادی ممالک نے عدن اور صنعا پر متعدد حملے کیے۔

سعودی عرب کے وزیر خارجہ نے خبردار کیا کہ اگر باغیوں نے جنگ بندی کا فائدہ اٹھانے کی کوشش کی اور اس کی خلاف ورزی کی تو فضائی کارروائیاں پھر سے شروع کی جا سکتی ہیں۔

اسی بارے میں