برطانیہ: ڈیوڈ کیمرون کی نئی کابینہ کا اعلان

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption وزیر اعظم کیمرون نے اپنی کابینہ کے چند اہم ارکان کا اعلان تو فتح کے چند گھنٹے بعد ہی کر دیا تھا

برطانیہ کے وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون نے کنزرویٹیو پارٹی کی اپنی نئی کابینہ میں مائیکل گوو کو وزیر انصاف بنانے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ کرس گریلنگ کو دارالعوام کا رہنما نامزد کیا ہے۔

نکی مورگن وزیر تعلیم کے ساتھ ساتھ مساوات کی بھی وزیر رہیں گی۔

خیال رہے کہ سنہ 1992 کے بعد پہلی بار مکمل طور پر ٹوریز کی حکومت بنانے میں کامیاب ہونے والے وزیر اعظم نے یہ اعلان پہلے ہی کردیا ہے کہ ان کے چانسلر (وزیرِ خزانہ) ، وزیر داخلہ، وزیر خارجہ اور وزیر دفاع اپنے عہدوں پر برقرار رہیں گے۔

سابق امیگریشن وزیر مارک ہارپر کو نئی وزرات دیے جانے کی امید ہے۔

جمعرات کو ہونے والے انتخابات میں وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون کی کنزرویٹیو پارٹی نے مجموعی طور پر دارالعوام کی 650 میں سے 331 نشستیں حاصل کی ہیں جس کے بعد اسے ایوان میں سادہ اکثریت مل گئی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ PA
Image caption مائیکل گوو کو وزیر انصاف بنانے کا فیصلہ کیا گیا ہے جبکہ تھریسا مے کو وزیر داخلہ

جمعے کو آنے والے نتائج کے بعد لیبر پارٹی کے رہنما ایڈ ملی بینڈ، لبرل ڈیموکریٹک رہنما نِک کلیگ اور یوکِپ کے رہنما نائجل فیراج نے استعفی دے دیا۔

دوسری جانب لیبر پارٹی کے منتخب پارلیمان اب اپنی پارٹی کے نئے سربراہ کے بارے میں غور و خوض کر رہے ہیں جبکہ ٹم فیرن نے کہا کہ وہ آنے والے دو تین دنوں میں یہ فیصلہ کریں کہ کیا انھیں نِک کلیگ کی جگہ آگے آنا چاہیے یا نہیں۔

اس کے علاوہ ڈاؤننگ سٹریٹ اور کارڈف میں حکومت کی جانب سے کٹوتی کیے جانے کے خلاف مظاہرے ہوئے ہیں۔

سکاٹ لینڈ مین زبردست کامیابی حاصل کرنے والی پارٹی ایس این پی کی رہنما نے اپنے تمام 56 منتخب اراکین سے ملاقات کی ہے۔

خیال رہے کہ کنزرویٹیو نے انگلینڈ کے کونسل انتخابات میں بھی کامیابی حاصل کی ہے اور 500 سے زیادہ سیٹیں حاصل کی ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ GETTY
Image caption نکی مورگن وزیر تعلیم کے ساتھ وزیر مساوات بھی ہوں گی

ٹوئٹر پر نیکی مورگن نے کہا کہ از سر نو وزیر بنائے جانے پر وہ ’بے حد خوش‘ ہیں اور اس جیت کو ڈاؤننگ سٹریٹ نے ’زبردست اعتماد کے ووٹ‘ سے تعبیر کیا ہے۔

بی بی سی کی سیاسی نامہ نگار ایلینور گارنيئر نے کہا کہ یہ اعلانات ’مسٹر کیمرون کی وفاداری کا انعام‘ ہیں۔

وزیر اعظم کیمرون نے اپنی کابینہ کے چند اہم ارکان کا اعلان تو فتح کے چند گھنٹے بعد ہی کر دیا تھا۔

ان ارکان میں جارج اوسبورن کو دوبارہ وزیرِ خزانہ تعینات کرنے کے ساتھ ساتھ فرسٹ سیکریٹری آف سٹیٹ کا اعزازی درجہ بھی دیا گیا ہے جس کے بعد عملی طور پر وہ نائب وزیرِاعظم بن گئے ہیں۔

اس کے علاوہ ٹریسا مے کو وزیر داخلہ، فلپ ہیمنڈ کو وزیر خارجہ اور مائیکل فیلن کو وزیر دفاع برقرار رکھنے کا فیصلہ بھی کیا گیا تھا۔

اسی بارے میں