لنزی گریم وائٹ ہاؤس کی دوڑ میں شامل

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ’میں سب سے موثر کمانڈر اینڈ چیف بن سکتا ہوں‘

امریکی ریپبلکن پارٹی کے سینیٹر لنزی گریم نے 2016 کے صدارتی انتخابات کی دوڑ میں حصہ لینے کا ارادہ ظاہر کر دیا ہے۔

امریکی ریاست جنوبی کیرولائنا سے تعالق رکھنے والے گریم نے کہا کہ وہ یکم جون کو اپنے آبائی شہر سنٹرل میں اس بات کا باقاعدہ اعلان کریں گے۔

ان کا کہنا ہے کہ انھوں نے یہ فیصلہ اس لیے کیا ہے کیونکہ ان کے خیال میں ’دنیا بکھر رہی ہے‘ اور وہ سمجھتے ہیں کہ وہ سب سے بہتر کمانڈر ان چیف بن سکتے ہیں۔

گریم صدر اوباما کی خارجی پالسی کو شدید تنقید کا نشانا بناتے رہے ہیں اور عراق اور شام میں امریکی افواج کو دولتِ اسلامیہ کا مقابلہ کرنے کے لیے بھیجنا چاہتے ہیں۔

گریم صدارتی انتخاب میں شمولیت اختیار کرنے والے رپبلکن پارٹی کے ساتویں امیدوار بن گئے ہیں۔

واشنگٹن میں بی بی سی کے انتھونی زرکر کا کہنا ہے کہ گریم گذشتہ انتخابی امیدوار میک کین کی طرح خارجی پالیسی پر سخت خیالات رکھتے ہیں اور ممکنہ طور پر قومی سلامتی کے امور کو اپنی صدارتی دوڑ کا ایک بڑا حصہ بنا کر پیش کریں گے۔

زرکر کا کہنا ہے کہ ان کی کامیابی کے امکانات کم ہیں کیونکہ ماضی میں ڈیموکریٹ پارٹی کے ساتھ تعاون اور بالخصوص ان کی امیگریشن کے قوانین میں اصلاحات کی حمایت نے بہت سے رپبلکن ووٹروں کو مایوس کیا ہے۔

سینیٹر لنزی گریم نے سی بی ایس ٹی وی کو بتایا کہ ان کا خارجی پالسی پر موقف صحیح رہا ہے اور اس لیے وہ سمجھتے ہیں کہ وہ سب سے بہتر کمانڈر اینڈ چیف بن سکتے ہیں۔

اسی بارے میں