ایمازون پر دولتِ اسلامیہ کے رسالے کی فروخت بند

تصویر کے کاپی رائٹ Amazon

آن لائن خریداری کی سہولت دینے والی مشہور کمپنی ایمازون نے شدت پسند تنظیم دولتِ اسلامیہ کے پروپیگنڈا رسالے کی فروخت بند کر دی ہے۔

دبیق نامی یہ رسالہ انگریزی زبان میں شائع ہوتا ہے اور اس کے چار مختلف شمارے ایمازون کی ویب سائٹ پر دستیاب تھے۔

تاہم اب بی بی سی کو دیے گئے بیان میں ایمازون کا کہنا ہے کہ اب انھیں قابلِ فروخت اشیا کی فہرست سے نکال دیا گیا ہے۔

اس میگزین کے ناشر کا نام الحیات میڈیا سینٹر ہے جو مغرب پر توجہ رکھنے والے دولتِ اسلامیہ کے میڈیا کا ایک حصہ ہے، جو وڈیو اور نیوز لیٹر تیار کرتا ہے۔

دولتِ اسلامیہ برطانیہ میں ایک ممنوعہ دہشت گرد تنظیم ہے۔

یہ میگزین برطانیہ، امریکہ، فرانس، جرمنی، اٹلی اور سپین میں ایمازون کی ویب سائٹس پر دستیاب تھا۔

ایمازون نے اب اپنے بیان میں کہا ہے کہ ’یہ چیز اب فروخت کے لیے دستیاب نہیں ہے۔‘ کمپنی نے اس بارے میں مزید معلومات نہیں دیں۔

مقررہ وقفوں سے نکلنے والا دبیق نامی رسالہ ایمزون پر جن موضوعات کو اجاگر کرتا ہے ان میں توحید، منہاج، ہجرت، جہاد اور جماعت شامل ہیں۔

اس رسالے کا اجراء 2014 میں ہوا تھا اور اس کا نام دبیق علامتی وجوہات پر شام کے ایک چھوٹےقصبے پر رکھا گیا۔

ایمزون کی ویب سائٹس اس رسالے کے ناشر کو ’کریئیٹ سپیس انڈیپینڈنٹ پبلشنگ پلیٹ فارم‘قرار دیتی ہے جو کہ خود ایمزون کی ناشر کمپنی ہے۔

اسی بارے میں