شام: زبدانی میں باغیوں کے گرد گھیرا تنگ

زبدانی شہر پر فضائی اور زمینی کارروائی تصویر کے کاپی رائٹ

شام میں سرکاری ٹیلی ویژن کے مطابق شامی فوج نے اپنی حلیف حزب اللہ کے ساتھ مل کر زبدانی کے قصبے میں باغیوں کے خلاف ایک بڑی کارروائی کا آغاز کر دیا ہے۔

باغیوں کے زیرِ قبضہ یہ شہر اپنی عسکری نوعیت کے اعتبار سے اہم ہے۔

زبدانی دارالحکومت دمشق کے شمال مغرب میں لبنان کی سرحد کے قریب واقع ہے اور یہاں سنی باغیوں کا قبضہ ہے۔

حزب اللہ کے ٹی وی چینل المنار نے تصاویر نشر کی ہیں جن میں فضائی اور زمینی کارروائی کے نتیجے میں ہونے والے دھماکوں سے بننے والے دھوئیں کے بادل نظر آ رہے ہیں۔

اطلاعات ہیں کہ شہری آبادی علاقے سے نقل مکانی کر گرئی ہے۔

بچے کھچے باغیوں کے بارے میں خیال ہے کہ انہیں لبنانی سرحد کے پاس پہاڑیوں سے فرار ہونے والے سینکڑوں باغیوں نے کمک فراہم کی ہے۔ ان باغیوں کو شیعہ تنظیم حزب اللہ نے پسپا ہونے پر مجبور کر دیا تھا۔

المنار کی رپورٹ کے مطابق زبدانی میں تصادم روکنے اور ایک پر امن حل کے لیے کی جانے والی کوششیں کامیاب نہیں ہو سکیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption صوبہ اِدلِب سے شامی حکومت کی فوج کو مشکلات کا سامنا رہا ہے

بی بی سی کی نامہ نگار جِم میور کا کہنا ہے کہ شہر پر قبضے کے لیے جنگ کے بادل کئی روز سے منڈلا رہے تھے۔

زبدانی کی عسکری اہمیت یوں بڑھ جاتی ہے کہ یہ شہر دمشق کو بیروت سے ملانے والی شاہراہ پر واقع ہے۔ ہماری نامہ نگار کا کہنا ہے کہ اس علاقے پر باغیوں کا قبضہ لمبے عرصے سے شامی حکومت کے حلق کا کانٹا بنا ہوا ہے۔

سرکاری ٹیلی ویژن نے شامی فوج کے ذرائع سے کہا ہے کہ سرکاری افواج ’کئی محاذوں پر پیشقدمی کی ہے‘ اور باغیوں کو بھاری نقصان اٹھانا پڑا ہے۔

زبدانی کے لیے جنگ کی خبریں ایک ایسے وقت موصول ہو رہی ہیں جب جمعرات اور جمعہ کو شمالی شہر حلب سے مزید جھڑپوں کی اطلاعات آئی تھیں۔

شامی فوج نے حکومت کے زیر قبضہ علاقوں پر باغیوں کے حملے کے بعد فضائی کارروائیاں کی ہیں۔ سرکاری خبر رساں ادارے کے بعد حملہ پسپا کر دیا گیا اور جوابی کارروائی میں 100 باغی بھی ہلاک ہوئے ہیں۔

اسی بارے میں