یونان کے بینک تین ہفتوں بعد آج کھل گئے ہیں

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption کئی ہفتوں سے یونان میں اے ٹی ایم مشینوں پر قطاریں ایک عام سی بات ہوگئی ہے

مالی بحران سے دوچار یونان میں تین ہفتوں کے لیے بند رہنے والے بینک آج پیر کی صبح کھل گئے ہیں۔

یونان اور اس کے قرض خواہوں کے درمیان مذاکرات میں مشکلات کی وجہ سے ملک کے بینک بند کر دیے گئے تھے اور صارفین پر ای ٹی ایم مشینوں سے پیسے نکالنے پر مختلف شرائط لاگو کر دی گئی تھیں۔

گذشتہ ہفتے یونانی حکومت اور اس کے بین الاقوامی قرض خواہوں کے درمیان معاہدہ طے پا گیا تھا جس کی وجہ سے یونان کو یورو زون سے خارج نہیں ہونا پڑا۔

معاہدے کے تحت یونانی حکومت کو مزید قرضے کے لیے ملک میں اصلاحات کرنا ہوں گی۔

اگرچہ پیر کی صبح بینک کھول دیے گئے ہیں تاہم اب بھی بہت سی پابندیاں قائم رہیں گی۔ اس کے علاوہ ملک میں ویلیو ایڈڈ ٹیکس میں بھی اضافہ کیا جا رہا ہے۔

ادھر جرمنی کا کہنا ہے کہ وہ یونان کو دیے گئے قرضے میں رعایت پر غور کرنے کے لیے تیار ہے تاہم اس میں کمی نہیں کی جا سکتی، صرف واپسی کی شرائط جیسے معاملات پر بات ہو سکتی ہے۔

کئی ہفتوں سے یونان میں اے ٹی ایم مشینوں پر قطاریں ایک عام سی بات ہوگئی ہے۔ بینکوں سے لوگوں کے بڑی مقدار میں پیسے نکلوا لینے کے خدشے کے پیشِ نظر صارفین پر ایک دن میں ساٹھ یورو نکلوانے کی حد موجود تھی۔ مگر روزانہ کی حد ختم کر کے ہفتہ وار 420 یورو کی حد لگائی گئی ہے تاکہ لوگوں کو روز اے ٹی ایم پر جانا نہ پڑے۔

تصویر کے کاپی رائٹ epa
Image caption جرمنی کا کہنا ہے کہ وہ یونان کو دیے گئے قرضے میں رعایت پر غور کرنے کے لیے تیار ہے تاہم اس میں کمی نہیں کی جا سکتی، صرف واپسی کی شرائط جیسے معاملات پر بات ہو سکتی ہے

ادھر رقوم کی ملک سے باہر منتقلی اور چیک کے ذریعے پیسے نکالنے پر مکمل پابندی ابھی بھی موجود ہے۔ اس کے علاوہ ملک میں ویلیو ایڈڈ ٹیکس کو 13 فیصد سے بڑھا کر 23 فیصد کیا جا رہا ہے۔ ٹیکس میں اضافہ ان اصلاحات میں شامل تھا جن کا یونان کے قرض خواہوں نے آئندہ بیل آوٹ پیکج پر بات کرنے سے پہلے لاگو کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔

ادھر یونان کے سابق وزیرخزانہ نے کہا تھا کہ ملک کی اقتصادی اصلاحات ’ناکام ہونے جارہی ہیں۔‘

بی بی سی کو دیے گئے انٹرویو میں سابق وزیرخزانہ وروفاکس کا کہنا ہے کہ یونان جس پروگرام پر عمل پیرا ہے وہ ’تاریخ کی بدترین میکرو اکنامک مینجمنٹ کے طور پر یاد رکھا جائے گا۔‘

وروفاکس کا کہنا تھا کہ ’جو کوئی بھی اس پر عمل درآمد کا ذمہ دار ہے یہ پروگرام ناکام ہونے جارہا ہے۔‘

یاد رہے کہ گذشتہ جمعرات کو یورپی سنٹرل بینک نے ملک میں حکومت کی جانب سے اصلاحات کے اہم پیکیج کی حمایت کے اعلان کے بعد یونانی بینکوں کو سپورٹ کرنے کا اعلان کر دیا تھا۔

اسی بارے میں