’اسرائیل جوہری معاہدے سے متفق نہیں، دوستوں میں اختلافات ہوتے ہیں‘

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption برطانوی خبر رساں ایجنسی روئٹرز کے مطابق اسرائیلی وزیر اعظم کے چہرے سے ناراضی عیاں تھی

عالمی طاقتوں اور ایران کے درمیان جوہری معاہدے کے بعد پہلے اسرائیل کا دورہ کرنے والے امریکی وزیر دفاع کا کہنا ہے کہ اسرائیل نے واضح کیا ہے کہ وہ اس معاہدے کے حوالے سے امریکہ سے متفق نہیں ہے۔

امریکی وزیر دفاع ایش کارٹر نے یہ بات اسرائیل کے دورے کے بعد اردن کے ایک فضائی اڈے پر میلایا سے کہی۔

ان کا کہنا تھا کہ اسرائیلی وزیر اعظم بینیامن نیتن یاہو نے واضح طور پر کہا ہے کہ وہ اس جوہری معاہدے پر امریکہ سے متفق نہیں ہیں۔

’ہم ہر بات پر متقفق نہیں ہوئے۔ اور اسرائیلی وزیر اعظم نے واضح طور پر کہا کہ وہ اس معاہدے کے حوالسے امریکہ سے متفق نہیں ہیں۔ لیکن دوستوں میں اختلافات ہو سکتے ہیں۔‘

ایران جوہری معاہدے کے بعد ایش کارٹر پہلے امریکی عہدیدار ہیں جنھوں نے اسرائیل کا دورہ کیا اور انھوں نے پیر کو اسرائیل کی لبنان کے ساتھ جنوبی سرحد کا دورہ کیا۔

انھوں نے وعدہ کیا کہ امریکہ ایران کی حمایت یافتہ تنظیم حزب اللہ سے نمٹنے کے لیے اسرائیل کی مدد کرے گا۔

برطانوی خبر رساں ایجنسی روئٹرز کے مطابق اسرائیلی وزیر اعظم کے چہرے سے ناراضی عیاں تھی۔

ایک امریکی اہلکار نے روئٹرز کو نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ اسرائیلی وزیر اعظم نے ملاقات میں اپنے تحفظات کھل کر بیان کیے۔

’ان کے وہی تحفظات تھے جو وہ پہلے کئی بار کھلے عام کہہ چکے ہیں۔‘

امریکی خبر رساں ایجنسی اے پی کے مطابق اسرائیلی وزیر اعظم اور ایش کارٹر نے میڈیا سے مختصر سی بات میں ایران کا ذکر نہیں کیا۔

اسی بارے میں