ترکی کا 100 فیصد حلال بحری جہاز

تصویر کے کاپی رائٹ monitering
Image caption ترکی میں ’حلال سیاحت‘ کی صنعت تیزی سے فروغ پا رہی ہے اور ہوٹلوں میں مسلمانوں کی تعطیلات منانے کے لیے خصوصی پیکج متعارف کروائے جار رہے ہیں

ترکی میں ایک کمپنی نے اسلامی رجحان رکھنے والے افراد کو مدنظر رکھتے ہوئے ’100 فیصد حلال بحری جہاز‘ متعارف کروایا ہے۔

ترکی کی سرکاری خبر رساں ایجنسی انادولو کا کہنا ہے کہ حلال بحری جہاز پر سفر کا آغاز ستمبر کے آخر میں ہو گا۔ جہاز میں مردوں اور عورتوں کے لیے الگ الگ سہولیات رکھیں گئی ہیں، جیسے ترکش حمام اور کھیلوں کے لیے مختص الگ الگ جگہیں وغیرہ۔

جہاز پر بحیرۂ ایجین کے سفر کے دوران شراب نہیں ملے گی اور نہ جوا کھیلا جا سکے گا۔ جہاز پر سور کے گوشت سے بنی مصنوعات بھی دستیاب نہیں ہوں گی۔

جہاز کی تزئین و آرائش میں اسلامی قواعد کا خیال رکھا گیا ہے۔ کمپنی کے پروجیکٹ منیجر نے بتایا کہ ’جہاز میں پینٹنگز بھی نہیں لگائی گئیں کیونکہ یہ اسلامی اقدار کے خلاف ہیں۔‘

ابتدا میں جہاز پر چار رات تک قیام کرنے کے ساتھ ساتھ مسافروں کو رویڈس کے سیاحتی مقام پر سیر کی پیشکش بھی کی گئی ہے۔

کمپنی کے جنرل مینجر نے کہا کہ ’یہ صرف ایک ایسا جہاز نہیں ہے جس پر شراب اور سور کے گوشت کی مصنوعات نہیں ہیں بلکہ یہ ایک ثقافتی اور تاریخی سفر ہو گا جس میں سماجی رابطہ بنانے کی فضا سازگار ہو گی۔‘

ترکی میں ’حلال سیاحت‘ کی صنعت تیزی سے فروغ پا رہی ہے اور ہوٹلوں میں مسلمانوں کی تعطیلات منانے کے لیے خصوصی پیکج متعارف کروائے جار رہے ہیں۔ جیسے صرف خواتین کا سوئمنگ پول یا خصوصی ساحل۔

اسی بارے میں