پاکستان اور بھارت ’انتہائی ضبط‘ سے کام لیں: بان کی مون

Image caption بان کی مون نے اپنے پیغام میں لائن آف کنٹرول کے دونوں جانب ہلاک ہونے والے شہریوں کے اہلِ خانہ سے تعزیت کی ہے

اقوامِ متحدہ کے سیکریٹری جنرل بان کی مون نے پاکستان اور بھارت کی سرحدی صورتحال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے دونوں ممالک سے کہا ہے کہ وہ ’انتہائی ضبط‘ کا مظاہرہ کریں۔

’نتیجہ خیز مذاکرات کی خواہش ہے‘

اوفا سمجھوتے کی خلاف ورزی

منگل کو اقوامِ متحدہ کے سیکریٹری جنرل کی جانب سے جاری کردہ تحریری بیان میں پاکستان اور بھارت پر زور دیا گیا ہے کہ وہ باہمی طور پر مذاکرات کریں۔

انھوں نے کہا کہ سرحدوں پہ پرتشدد واقعات کے نتیجے میں دونوں ملک ’انتہائی ضبط‘ سے کام لیں۔

بان کی مون نے حال ہی میں لائن آف کنٹرول کے دونوں جانب پاکستانی اور بھارتی شہریوں کی ہلاکتوں پر تشویش کا اظہار کیا۔

انھوں نے اپنے پیغام میں مقتولین کے لواحقین سے اظہارِ افسوس بھی کیا ہے۔

سیکرٹیری جنرل نے اس بات پر زور دیا کہ دونوں ہمسایہ ممالک کو اپنے اختلافات کو مذاکرات کے ذریعے حل کرنا چاہیے اور شہریوں کی حفاظت کو یقینی بنانے کے لیے ضروری اقدامات کرنے چاہیے۔

ان کا کہنا تھا کہ وہ 23 اور 24 تاریخ کو پاکستان اور بھارت کے قومی سلامتی کے مشیروں کے درمیان دہلی میں طے شدہ مذاکرات کے مثبت نتائج کے لیے پرامید ہیں۔

خیال رہے پاکستان کا دعویٰ ہے کہ گذشتہ دو ماہ کے دوران بھارت کی جانب سے لائن آف کنٹرول اور ورکنگ باؤنڈری پر جنگ بندی کی 70 مرتبہ خلاف ورزی کی گئی ہے۔

بھارت میں نریندر مودی کے وزیراعظم بننے کے بعد سے پاکستان اور بھارت کے تعلقات میں کشیدگی آئی ہے اور حال ہی میں پاکستان کے وزیراعظم نواز شریف اور بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے روس میں ایک دوسرے سے ملاقات کی اور بات چیت دوبارہ جاری رکھنے کے عزم کا اظہار کیا تھا۔

اسی بارے میں