بینکاک بم دھماکہ کیس میں ایک شخص گرفتار

Image caption ڈپٹی نیشنل پولیس چیف نے تصدیق کی ہے کہ انھوں نے ’ایک شخص کو حراست میں لیا ہے‘

تھائی لینڈ میں پولیس حکام کے مطابق انھوں نے دو ہفتے قبل بینکاک میں ہونے والے بم دھماکے میں ملوث ہونے کے شک میں ایک شخص کو گرفتار کیا ہے۔

بینکاک میں ہونے والے اس دھماکے میں 20 افراد ہلاک ہوئے تھے۔

پولیس ترجمان پراوت تھاورنسری نے تصدیق کی ہے کہ گرفتار ہونے والا شخص غیر ملکی ہے اور انھیں بینکاک کے نواحی علاقے نانگ جوک سے گرفتار کیا گیا ہے۔

ترجمان کے مطابق گرفتار ہونے والے شخص کے اپارٹمنٹ سے بم بنانے والا مواد اور دس پاسپورٹ ملے ہیں۔

بینکاک میں بعض اطلاعات مطابق گرفتار ہونے والے شخص کا تعلق ترکی ہے تاہم پولیس ترجمان نے اس خبر پر تبصرہ کرنے سے انکار کر دیا ہے۔

انھوں نے کہا کہ ’یہ شخص ویسا ہی لگتا ہے جس کی ہمیں تلاش تھی۔‘

ڈپٹی نیشنل پولیس چیف جنرل چکٹپ چائی جندا نے ٹی وی کی براہ راست نشریات میں تصدیق کی کہ انھوں نے ’ایک شخص کو حراست میں لیا ہے۔‘

نیشنل پولیس چیف کا کہنا ہے کہ ’ابھی یہ واضح نہیں ہے کہ سنیچر کو گرفتار ہونے والا شخص وہی ہے یا نہیں جسے سی سی ٹی وی کیمرے میں دیکھا گیا تھا۔‘

یاد رہے کہ تھائی لینڈ کے دارالحکومت بینکاک میں 17 اگست کو ایک مندر کے قریب ہونے والے بم دھماکے میں20 افراد ہلاک اور 100 سے زائد افراد زخمی ہوئے تھے جبکہ زخمی ہونے والوں میں زیادہ تر سیاح تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ REUTERS
Image caption بینکاک میں ہونے والے اس دھماکے میں 20 افراد ہلاک ہوئے تھے

یہ دھماکہ ضلع چڈلام میں واقع ایراون مندر کے قریب ہوا تھا۔

واضح رہے کہ تھائی لینڈ کی حکومت کا کہنا تھا کہ یہ مندر سیاحوں کی توجہ کا مرکز ہے اس لیے ہو سکتا ہے کہ اس دھماکے کا ہدف غیر ملکی سیاح ہوں۔

نامہ نگار جوناتھن ہیڈ کے مطابق بینکاک کے مرکز میں فائیو سٹار ہوٹل کے قریب واقع یہ مندر بہت مشہور ہے۔

یہ مندر ہندوؤں کے دیوتا براہما کا ہے لیکن ہر روز یہاں ہزاروں کی تعداد میں بدھ مت کے ماننے والے بھی آتے ہیں۔

اسی بارے میں