فرانس دولتِ اسلامیہ کے خلاف فضائی حملے کرے گا

تصویر کے کاپی رائٹ APTN
Image caption فرانس کا شام میں زمینی فوج بھجوانے کا ارادہ نہیں

فرانس کے صدر فرانسوا اولاند نے اپنی فوج سے شام میں شدت پسند تنظیم دولتِ اسلامیہ کے خلاف فضائی حملوں کی تیاری کا حکم دیا ہے۔

پیرس میں اپنے ششماہی خطاب میں فرانسوا اولاند نے بتایا کہ ان کا ملک منگل کو دولتِ اسلامیہ کے خلاف حملوں کے جائزے کے لیے جاسوسی پروازوں کا آغاز کرےگا۔

تاہم اپنے خطاب میں انھوں نے شام میں زمینی فوج بھجوانے کو خارج از امکان قرار دیا۔

ان کا کہنا تھا کہ دولتِ اسلامیہ فرانس سمیت مختلف ممالک کے حلاف دہشت گردی کے حملوں کی منصوبہ بندی کر رہی ہے۔

خیال رہے کہ اقوامِ متحدہ کے اعداد و شمار کے مطابق شام کی خانہ جنگی میں دو لاکھ 20 ہزار سے زائد افراد ہلاک ہو چکے ہیں جبکہ اس دوران 90 لاکھ سے زائد نقل مکانی پر مجبور ہوئے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ ’میری ذمہ داری ہے کہ میں اس بات کو یقینی بناؤں کہ ہم اپنے ملک کو لاحق خطرات سے ہر ممکن طریقے سے آگاہ ہیں۔‘

فرانسوا اولاند نے بتایا کہ انھوں نے اپنے وزیرِ دفاع سے کہا ہے کہ وہ شام میں جاسوسی پروازوں کا آغاز کل سے شروع کریں تاکہ ’ہم شام میں دولتِ اسلامیہ کے خلاف فضائی حملوں پر غور کرنے کے قابل ہو سکیں۔‘

اسی بارے میں