’مغربی ممالک داعش کو شکست دینے کے لیے شام کا ساتھ دیں‘

تصویر کے کاپی رائٹ AP

شام کے صدر بشار الاسد کی ایک سینیئر مشیر بعثینہ شعبان نے آسٹریلیا اور مغربی ممالک سے کہا ہے کہ اپنے آپ کو دولت اسلامیہ کہلانے والی شدت پسند تنظیم کو شکست دینے کے لیے شام کی حکومت کا ساتھ دیں۔

آسٹریلین براڈکاسٹنگ کارپوریشن کو دیے جانے والے ٹی وی انٹرویو میں انھوں نے کہا کہ مغربی ممالک شامی صدر کی مخالفت نہ کریں اور شامی سیاست میں مداخلت نہ کریں۔

آسٹریلیا نے شام میں پہلے فضائی حملے کی تصدیق کر دی

ان کا مزید کہنا تھا کہ امریکہ کی قیادت میں اتحاد نے شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ کے خلاف نمایاں کامیابی حاصل نہیں کی۔

انھوں نے یہ بات ایسے وقت کی ہے جب آسٹریلیا نے شام میں دولت اسلامیہ کے خلاف پہلی بار فضائی کارروائی کی ہے۔

آسٹریلیا اس اتحاد کا حصہ ہے جو عراق اور شام میں دولت اسلامیہ کے ٹھکانوں پر فضائی کارروائی کر رہے ہیں۔

شعبان نے کہا ’آسٹریلوی حکومت کے لیے میرا پیغام یہ ہے کہ دہشت گردی کے خلاف لڑنے کے لیے پکا ارادہ ہونا چاہیے۔ اور یہ ارادہ ایک حقیقی اتحادی اور روس، چین، ایران اور شامی حکومت کے ساتھ تعاون کے ذریعے آئے گا۔ ‘

ان کا کہنا تھا ’شام میں کوئی خانہ جنگی نہیں ہے ۔۔۔ صرف ایک تصادم جاری ہے جو شامی عوام اور شدت پسند عناصر کے درمیان ہے جن کو دنیا بھر کے 83 ممالک سے ہمارے ملک لایا جا رہا ہے۔‘

انھوں نے مزید کہا ’میں نہیں سمجھتی کہ امریکی قیادت میں اتحاد نے اب تک دولت اسلامیہ کے خلاف کوئی نتیجہ خیز کام کیا ہے۔‘

اسی بارے میں