’دولت اسلامیہ نے پیلمائرا میں فتح کی محراب مسمار کر دی‘

تصویر کے کاپی رائٹ .
Image caption ایک اندازے کے مطابق اس محراب فتح کی تعمیر کوئی دو ہزار سال قبل ہوئي تھی

شام میں حکام اور مقامی ذرائع نے بتایا ہے کہ شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ کے جنگجوؤں نے جنوبی شام کے قدیمی شہر پیلمائرا میں ایک اور عمارت کو زمیں بوس کر دیا ہے۔

پیلمائرا کے آثار قدیمہ کو بچانے کے لیے کوشاں ایک رضاکار نے خبررساں ادارے اے ایف پی کو بتایا کہ جنگجوؤں نے ’آرچ آف ٹریئمف‘ یعنی فتح کے محراب کو خاک میں ملا دیا ہے۔

ایک اندازے کے مطابق اس کی تعمیر کوئی دو ہزار سال قبل ہوئي تھی۔

خیال رہے کہ ابھی یہ علاقہ دولت اسلامیہ کے جنگجوؤں کے قبضے میں ہے۔

اس سے قبل دولت اسلامیہ نے اسی مقام پر دو معبدوں کو پہلے ہی مسمار کر رکھا ہے۔ اقوام متحدہ کے ثقافت کا ادارہ یونیسکو اسے قدیم دنیا کے اہم ثقافتی مراکز میں شمار کرتا ہے۔

پیلمائرا کے رضاکار محمد حسن الحومسی نے بتایا: ’محرابِ فتح کو نیست نابود کر دیا گیا ہے۔ یہ کام دولت اسلامیہ نے کیا ہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption یونیسکو پیلمائرا کے باقیات کو قدیم دنیا کے اہم ثقافتی مراکز میں شمار کرتا ہے

شام کے بحران پر نظر رکھنے والی لندن میں قائم انسانی حقوق کی آبزرویٹری کا کہنا ہے کہ وہاں موجود ذرائع نے اس آثار قدیمہ کی تباہی کی تصدیق کی ہے۔

شام میں آثار قدیمہ کے سربراہ مامون عبدالکریم نے بھی اس خبر کی تصدیق کی ہے اور خبر رساں ادارے روئٹرز کو بتایا ہے کہ ’اگر دولت اسلامیہ کا اس شہر پر قبضہ جاری رہتا ہے تو یہ شہر کی موت ہے۔‘

یونیسکو کے ڈائرکٹر جنرل ارینا بوکووا نے کہا کہ اس کی تباہی جنگی جرائم کا ارتکاب ہے اور انھوں نے بین الاقوامی برادری سے دولت اسلامیہ کے خلاف متحدہ ہوکر کھڑے ہونے کی اپیل کی ہے جو شامی باشندوں سے ’اس کا علم، اس کی شناخت اور اس کی تاریخ چھین لینے کے درپے ہے۔‘

خیال رہے کہ دولت اسلامیہ کے جنگجوؤں نے مئی میں شام کی حکومت سے یہ شہر چھین لیا تھا اور اس کے بعد سے وہاں کے معبدوں اور فنی نمونوں کو تباہ کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔

اسی بارے میں