شام میں ایرانی جنرل ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ

ایران کے پاسدارانِ انقلاب کا کہنا ہے کہ شام کے شہر حلب میں دولت اسلامیہ کہلانے والی تنظیم کے خلاف شامی فوج کے جنگی مشیر کے فرائض سرانجام دیتے ہوئے اس کے ایک جنرل ہلاک ہو گئے ہیں۔

برطانوی خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق جنرل حسین ہمدانی بدھ کی شام کو ہلاک ہوئے۔

خطے کے ملکوں میں ایران شام کے صدر بشار الاسد کا سب سے بڑا حامی ہے اور شام کی چار سالہ خانہ جنگی کے دوران ایران نے شامی حکومت کو بھر پور اقتصادی اور فوجی مدد فراہم کی ہے۔

ہمدانی ایران کی عراق کے خلاف آٹھ سالہ جنگ میں حصہ لے چکے تھے اور انھیں 2015 میں ایلیٹ دستوں کے چیف کے نائب کمانڈر کے عہدے پر ترقی دے دی گئی تھی۔

روئٹرز نے ذرائع کے حوالے سے خبر دی ہے کہ گذشتہ ماہ بہت ایرانی فوجیوں کی ایک بہت بڑی تعداد کو شام میں تعینات کیا گیا ہے۔

خبر رساں ادارے کے مطابق اس دوران سینکڑوں کی تعداد میں ایرانی فوجی شام پہنچے ہیں جہاں وہ ملک کے شمال مغربی اور مغربی حصوں میں شامی حکومت کے مخالفین کے خلاف ایک بہت بڑی کارروائی کا آغاز کرنے والے ہیں۔

تاہم ایران اتنی بڑی تعداد میں شام میں ایرانی فوج کے پہنچنے کی خبروں کی تردید کرتا ہے۔

اسی بارے میں