فلسطینیوں کا اسرائیل پر راکٹ حملہ

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption حماس کے رہنما اسماعیل ہنیا نے حالیہ صورت حال کو ایک نئے انتفادہ سے تعبیر کیا ہے

اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ غزہ کے فلسطینی جنگجوؤں نے تیزی سے کشیدہ ہوتے ہوئے ماحول کے درمیان جنوبی اسرائیل میں راکٹ داغے ہیں۔

فوج کی جانب سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ سنیچر کو سرحد پر رہنے والی اسرائیلی برادریوں کو ہوشیار رہنے کے لیے سائرن بجائے گئے لیکن راکٹ ایک کھلی جگہ پر گرا اور اس میں کوئی بھی زخمی نہیں ہوا۔

اسرائیل میں فوجی سمیت مزید سات زخمی، ایک حملہ آور ہلاک

سپاہیوں پر حملہ کرنے والا شخص ہلاک: اسرائیلی حکام

خیال رہے کہ حالیہ دنوں فلسطینیوں اور اسرائیلی فوج کے درمیان تنازعات اور حملوں کا سلسلہ جاری ہے۔

غزہ میں برسر اقتدار حماس کے رہنما اسماعیل ہنیا کا کہنا ہے کہ یہ ایک نیا انتفادہ جبکہ یروشلم سے بی بی سی کے نمائندے یولاندے نیل کا کہنا ہے کہ تشدد کی سطح ابھی اس حد تک نہیں پہنچی کہ اسے انتفادہ کا نام دیا جاسکے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption فلسطینیوں اور اسرائیلیوں کے درمیان کشیدگی میں حالیہ دنوں میں اضافہ ہوا ہے

اس سے قبل غزہ میں دو سرحدی راستوں پر مظاہروں کے دوران اسرائیلی فوجیوں نے چھ فلسطینیوں کو گولی مار کر ہلاک کر دیا تھا۔

اسرائیلی فوج کی ایک ترجمان کے مطابق فائرنگ سے 60 سے زیادہ افراد زخمی بھی ہوئے۔

ان کا کہنا تھا کہ فوجیوں نے فائرنگ اس وقت کی جب 200 کے قریب فلسطینی پتھراؤ کرتے ہوئے اور جلتے ٹائر لے کر سرحدی راستوں کی جانب بڑھے۔

یہ فلسطینی مقبوضہ بیت المقدس اور غرب اردن کے فلسطینیوں سے اظہارِ یکجہتی کے لیے جمع ہوئے تھے۔

فلسطینیوں اور اسرائیلیوں کے درمیان کشیدگی میں حالیہ دنوں میں اضافہ ہوا ہے۔

گذشتہ چند دنوں میں فلسطینیوں کے اسرائیلیوں پر حملوں میں چار اسرائیلی ہلاک اور کئی زخمی ہوئے ہیں جبکہ غربِ اردن اور مقبوضہ بیت المقدس کے مشرقی علاقے میں سکیورٹی فورسز اور فلسطینی مظاہرین کے درمیان جھڑپوں میں کم از کم تین فلسطینی ہلاک ہو چکے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption فلسطینی مقبوضہ بیت المقدس اور غرب اردن کے فلسطینیوں سے اظہارِ یکجہتی کے لیے جمع ہوئے تھے

پولیس کے مطابق جمعے کو پہلی بار فلسطینیوں کے حملوں کے جواب میں بھی حملے کا واقعہ پیش آیا ہے اور اسرائیلی شہر دیمونہ میں چار عرب افراد کو بظاہر ایک انتقامی حملے کا نشانہ بنے ہیں۔

پولیس نے حملے کے بعد ایک اسرائیلی مشتبہ شخص کو گرفتار بھی کیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ دیمونہ میں ہونے والا حملہ بظاہر ’ قومی عصبیت‘ کی بنیاد پر کیا گیا تھا۔ اس حملے میں دو اسرائیلی دیہاتی اور دو فلسطینی زخمی ہوئے تھے۔

دیمونہ کے حملے کے بعد بیت الخلیل کے قریب ایک یہودی بستی کے پاس ایک حملہ کیا گیا جس میں ایک پولیس اہلکار زخمی ہو گیا جبکہ حملہ آور کو گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption مظاہرین نے سڑکو جلتے ہوئے ٹائر سے رخنہ ڈالنے کی کوشش کی

دیگر واقعات میں یروشلم میں ایک 16 سالہ انتہائی قدامت پسند یہودی فرقے سے تعلق رکھنے والے لڑکے کو چاقو سے وار کر کے زخمی کیا گیا اور پولیس نے حملہ آور فلسطینی کو پکڑ لیا۔

اسرائیلی وزیر اعظم بن یامین نتن یاہو نے کہا کہ وہ ’معصوم عربوں پر تشدد کے واقعات کی سختی سے مذمت‘ کرتے ہیں۔ انھوں نے قانون توڑنے والوں کو انصاف کے دائرے میں لانے کا وعدہ کیا۔

اسی بارے میں