روس کے مال میں ریچھ گھس آیا

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

مشرقی روس کی پولیس نے ایک بند شاپنگ مال میں گھسنے والے ایک جنگلی ریچھ کو گولی سے مار دیا ہے۔

منگل کی رات کو چین کی سرحد کے قریب خابرووسک کے علاقے میں ایک ریچھ مال میں گھس گیا اور پھر ایک دروازے سے باہر نکل آیا۔

گدھے کی موت پر وزرا میں جنگ

پولیس نے ایک ماہرِ حیوانات کے آنے سے پہلے ہی اسے ایک سکول کے صحن میں گولی مار کر مار ڈالا۔

حکومت کے تفتیش کاروں نے کہا ہے کہ جانور کو مارنے کی وجوہات جاننے کی ’کئی درخواستیں‘ ملنے کے بعد انھوں نے تحقیقات شروع کر دی ہیں۔

سکیورٹی کیمروں کی فوٹیج میں ریچھ کو مال کی راہداری میں بھاگتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے، جس کے بعد اس نے دو دروازوں کو دھکا دے کر کھولا اور باہر نکل آیا۔

اس کے بعد ایک افسر نے اسے گولی مار دی۔

سرکاری ویب سائٹ ’ویسٹی ڈاٹ آر یو‘ نے جانوروں کے حقوق کے لیے لڑنے والی ایک سرگرم کارکن نتالیا کووالینتو کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ’پولیس نے آسان کام کیا۔ پہلے تو انھوں نے جانور کو پاگل کرنے کے لیے مال میں دھواں پھینکا اور اس کے بعد جب خوف زدہ جانور نے مال سے باہر آ کر اپنا دفاع کرنے کی کوشش کی تو انھوں نے اسے مار ڈالا۔‘

سرکاری خبر رساں ادارے ’تاس‘ کا کہنا ہے کہ سردیوں کے موسم میں لمبی نیند سونے سے پہلے ریچھ خوراک کی تلاش میں آبادی والے علاقوں میں آ جاتے ہیں۔

ادارے کے مطابق رواں سال کے دوران 60 کے لگ بھگ ’خطرناک‘ ریچھ مارے گئے ہیں۔ ادارے نے مزید یہ بھی کہا ہے کہ ریچھوں کے حملوں میں دو افراد ہلاک اور چار زخمی ہوئے ہیں۔

اسی بارے میں