امریکہ میں پاکستانی کو شدت پسندی کے جرم میں 40 سال قید

تصویر کے کاپی رائٹ Handout
Image caption عابد نصیر کو 11 فیگر افراد کے ساتھ 2009 میں برطانیہ میں گرفتار کیا گیا تھا

امریکہ کی عدالت نے پاکستانی عابد نصیر کو مختلف ممالک میں شدت پسند کارروائیوں کے الزام میں 40 سال قید کی سزا سنائی ہے۔

29 سالہ عابد کو برطانیہ نے امریکہ کے حوالے کیا تھا۔

امریکی حکام کا کہنا ہے کہ عابد مانچسٹر، نیو یارک سٹی اور کوپن ہیگن پر حملوں کی منصوبہ بندی میں ملوث تھا۔

مارچ میں جیوری نے عابد کو القاعدہ کی معاونت کرنے اور بارودی مواد کے استعمال کی سازش میں قصوروار ٹھہرایا تھا۔

ایف بی آئی کے ڈاریکٹر کا کہنا ہے کہ عابد پاکستان سے برطانیہ پڑھنے کے لیے گئے تھے۔ تاہم پرھنے کی بجائے وہ دوسری لوگوں کی جان لینے کی جانب چل پڑے۔

عابد نصیر کو 11 فیگر افراد کے ساتھ 2009 میں برطانیہ میں گرفتار کیا گیا تھا۔ ان پر الزام تھا کہ وہ مانچسٹر کے شاپنگ مال میں ایسٹر کے موقعے پر دھماکہ کرنے کی سازش کر رہے تھے۔

تاہم بارودی مواد نہ ملنے کے باعص ان افراد کو ملک چھوڑنے کا حکم دیا گیا تھا۔ تاہم عابد نصیر کی ملک بدری عدالت نے اس وجہ سے روک دی کہ وہ پاکستان میں محفوظ نہیں ہو گے۔