غربِ اردن میں تشدد کے واقعات میں دو فلسطینی ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption اسرائیل اور فلسطین کے دررمیان گذشتہ دو ماہ سے جاری تشدد کے واقعات میں اب تک 90 فلسطینی، 19 اسرائیلی اور ایک امریکی شہری ہلاک ہو چکا ہے

اسرائیل میں حکام کے مطابق غربِ اردن میں تشدد کے مختلف واقعات میں دو فلسطینی ہلاک ہو گئے ہیں۔

اسرائیل کے سرحدی محافظوں نے ایک فلسطینی شخص کو اس وقت گولی مار کر ہلاک کر دیا جب اس نے نابلوس شہر کے قریب ایک چیک پوائنٹ پر چاقو لہرایا۔

غرب اردن اور اسرائیل میں پرتشدد واقعات، پانچ افراد ہلاک

’چاقو کے حملے دہشت گردی ہے‘ جان کیری

اسرائیل کی پولیس کے ترجمان لوبا سمری کا کہنا ہے کہ ایک شخص نے ٹیکسی سے اتر کر چاقو لہراتے ہوئے فوجی پوسٹ کی جانب بھاگنا شروع کر دیا۔

فلسطین کی وزارتِ صحت نے 51 سالہ شخص کی شناخت سامر سریرسی کے نام سے کی ہے۔

اس سے قبل اسرائیلی فوجیوں نے اسلحے کی تلاش میں کٹانا کے گاؤں پر چھاپہ مارا تھا۔ جس کے خلاف فلسطینیوں نے پولیس پر پتھراؤ اور فائر بم پھینکے جس کے نتیجے میں ایک 21 سالہ شخص تاہا سر میں گولی لگنے کے نتیجے میں ہلاک ہو گیا۔

اس سال اکتوبر سے لے کر اب تک ایک امریکی شہری اور 19 اسرائیلی ان حملوں میں ہلاک ہو چکے ہیں۔ جبکہ اسرائیل کی فوج اور سکیورٹی فورسز کے ساتھ جھڑپوں اور ان پر حملے کرنے کے واقعات کے دوران 86 فلسطینی ہلاک ہوئے ہیں۔ ان میں خواتین کے علاوہ بیشتر نو عمر لڑکے تھے۔

فلسطین مقبوضہ علاقوں میں خون ریزی کا یہ تازہ سلسلہ اسرائیل کی طرف سے یہودیوں کے مسجد اقصیٰ کے دوروں میں اضافے کے بعد شروع ہوا تھا۔

اسی بارے میں