بغیر ویزا امریکہ آنے والوں کی جانچ پڑتال میں سختی کا اعلان

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption اس وقت ویزے کے بغیر آنے والے پروگرام کے تحت 38 ممالک کے شہری امریکہ میں 90 روز تک قیام کر سکتے ہیں

امریکہ نے اعلان کیا ہے کہ پیرس میں حملوں کے بعد ان ممالک کے باشندوں کے امریکہ آنے کی شرائط سخت کی جا رہی ہیں جن کو ویزے کی ضرورت نہیں ہوتی۔

ایک اندازے کے مطابق ہر سال 38 ممالک کے دو کروڑ شہری بغیر ویزے کے امریکہ آتے ہیں۔

پیرس میں ہونے والوں حملوں کے بعد امریکی سیاست دانوں کو تشویش ہے کہ شدت پسند امریکہ آ سکتے ہیں۔

کانگریس میں پیش کی گئیں تجاویز میں کہا گیا ہے کہ تمام ایسے ممالک جن کے باشندوں کو ویزے کی ضرورت نہیں ہوتی ان کو کہا جا رہا ہے کہ وہ ’ای پاسپورٹ‘ کا اجرا کریں۔

تجاویز میں ہے گیا ہے کہ ان ممالک کے شہریوں کی رجسٹریشن کو سخت کر دیا جائے گا اور ان کے بارے میں یہ بھی معلوم کیا جائے گا کہ آیا وہ کسی ملک کے ایسے علاقے میں تو نہیں گئے جس پر شدت پسندوں کا قبضہ ہو۔

کانگریس کو یہ بھی تجویز کیا گیا ہے کہ محکمہ ہوم لینڈ سکیورٹی کو مزید اختیارات دیے جائیں جن میں ان ہوائی کمپنیوں پر جرمانہ بھی شامل ہے جو پاسپورٹ کی تصدیق کرنے میں ناکام رہتی ہیں۔

وائٹ ہاؤس کے ترجمان جوش ارنسٹ نے پیرس میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ان اقدامات سے ’گمشدہ یا چوری شدہ پاسپورٹ پر شدت پسندوں کے سفر کرنے کی کوشش کو ناکام بنانے میں ہماری صلاحیت بہتر ہو گی۔‘

اس وقت ویزے کے بغیر آنے والے پروگرام کے تحت 38 ممالک کے شہری امریکہ میں 90 روز تک قیام کر سکتے ہیں۔

یاد رہے کہ پیرس میں حملے کرنے والوں میں بیلجیئم اور فرانس کے شہری ملوث تھے اور یہ دونوں ملک اس فہرست میں شامل ہیں جن کے شہری بغیر ویزا 90 روز تک امریکہ میں قیام کر سکتے ہیں۔

اسی بارے میں