اسرائیلی فوجی پر چاقو سے حملہ کرنے والے’دو فلسطینی ہلاک‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption مقبوضہ بیت المقدس میں رواں برس اکتوبر کے مہینے سے چاقو کے حملوں میں تیزی آئی ہے

اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ ایک فوجی پر چاقو سے حملہ کرنے والے دو فلسطینیوں کو گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا ہے۔

جمعے کو جاری ہونے والے بیان کے مطابق یہ واقعہ جمعرات اور جمعے کی درمیانی شب بیت الخلیل نامی شہر میں پیش آیا۔

اسرائیلی سکیورٹی اہلکاروں پر مزید حملے، ایک حملہ آور ہلاک

بیان میں کہا گیا ہے کہ ’دو حملہ آوروں نے فوجی پر چاقو سے وار کیے اور جواب میں خطرے کو مدِنظر رکھتے ہوئے فوجیوں نے حملہ آوروں پر فائرنگ کی جس سے وہ مارے گئے۔‘

خیال رہے کہ مقبوضہ بیت المقدس اور دیگر علاقوں میں رواں برس اکتوبر کے مہینے سے چاقو کے حملوں میں تیزی آئی ہے اور ایسے حملوں میں 19 اسرائیلی اور ایک امریکی شہری مارا جا چکا ہے۔

اسی عرصے کے دوران اسرائیلی سکیورٹی فورسز کے اہلکاروں کے ہاتھوں 107 فلسطینی ہلاک ہوئے ہیں۔

اسرائیلی حکام کا کہنا ہے کہ اس حملے سے قبل جمعرات کو بیت المقدس اور غربِ اردن کے علاقوں میں حملوں کے واقعات میں ایک اسرائیلی پولیس اہلکار، ایک فوجی اور ایک راہ گیر زخمی ہوا جبکہ دو مبینہ فلسطینی حملہ آور مار دیے گئے۔

خبر رساں ادارے اے ایف پی کا کہنا ہے کہ ان مرنے والوں میں سے فلسطینی اتھارٹی کی سکیورٹی فورس کا 37 سالہ رکن ماذن حسن تھا۔

اس شخص کے بارے میں اسرائیلی حکام کا دعویٰ ہے کہ اس نے غربِ اردن کے گاؤں حضمہ کے نزدیک اسرائیلی فوجیوں پر فائرنگ کی تھی۔

اسی بارے میں