’شام دولتِ اسلامیہ کے خلاف تعاون پر متفق ہو سکتا ہے‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

امریکہ کے وزیرِ خارجہ جان کیری نے کہا ہے کہ مخصوص حالات میں یہ ممکن ہے کہ شامی صدر بشار الاسد کے اقتدار چھوڑنے سے پہلے شامی حکومت اور باغی افواج اپنے آپ کو دولتِ اسلامیہ کہلانے والی تنظیم کے خلاف تعاون کرنے پر آمادہ ہو جائیں۔

جان کیری کے مطابق بشار الاسد کا مستقبل واضح ہونے کی صورت میں شاید باغی افواج دولتِ اسلامیہ کے خلاف تعاون پر آمادہ ہو جائیں۔

ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ صورتِ حال بہت زیادہ مشکل ہے کیونکہ اس کا یہ مطلب بھی لیا جا سکتا ہے کہ ہم بشار الاسد کو اقتدار میں لانے کے لیے دخل اندازی کر رہے ہیں جو مکمل طور پر ناقابلِ قبول ہے۔

سوئٹزرلینڈ: امن کانفرنس بشار الاسد کے مستقبل پر منقسم

اقتدار سے علیحدگی موضوعِ بحث نہیں ہے: بشار الاسد

امریکہ اور مغربی ممالک کا یہ موقف رہا ہے کہ صدر بشار الاسد کی اقتدار سے علیحدگی تک شام کو نہیں بچایا جا سکتا۔

واضح رہے کہ شام کے تنازعے پرگذشتہ برس سوئٹزرلینڈ میں امن کانفرنس صدر بشار الاسد کے مستقبل کے حوالے سے تلخ تقسیم کے ساتھ ختم ہو گئی تھی۔

شام کے تنازعے پر سوئٹزرلینڈ میں امن کانفرنس شروع ہونے پر شامی اہلکاروں اور حزب مخالف کے درمیان تلخ الزامات کا تبادلہ ہوا تھا۔

شام میں گذشتہ تین سال سے جاری خانہ جنگی میں اب تک ایک لاکھ سے زیادہ افراد مارے جا چکے ہیں۔

ایک تخمینے کے مطابق 20 لاکھ شامی ملک چھوڑنے پر مجبور ہوئے ہیں جب کہ 65 لاکھ سے زائد ملک کے اندر بےگھر ہو گئے ہیں۔

اسی بارے میں