’استاد نے داعش سے منسوب حملے کے بارے میں جھوٹ بولا‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ استاد پر حملہ اس وقت کیا گیا جب وہ کلاس شروع ہونے کی تیاری کر رہے تھے

فرانس کے دارالحکومت پیرس میں حکام کا کہنا ہے کہ ایک سکول کے استاد جس نے دعویٰ کیا تھا کہ ان پر ایک شخص نے ’داعش‘ کہتے ہوئے حملہ کیا تھا، نے جھوٹ بولا ہے۔

استاد نے پیر کی صبح دعویٰ کیا تھا کہ پیرس کے ایک مضافاتی علاقے میں قائم ان کے سکول میں ایک شخص نے ان پر تب حملہ کیا تھا جب وہ اکیلے تھے۔

شہر کے مقامی استغاثہ کے دفتر نے ایک بیان میں کہا ہے کہ وہ استاد سے پوچھ گچھ کر کے یہ پتہ لگانے کی کوشش کر رہے ہیں کہ انھوں نے جھوٹ کیوں بولا تھا۔

واضح رہے کہ اس سے قبل حکام کو اس استاد نے بتایا تھا کہ ایک شخص نے ’یہ داعش ہے اور یہ وارننگ ہے‘ کہتے ہوئے حملہ کر دیا تھا۔

حکام کا کہنا تھا کہ استاد کے بقول اس شخص نے یا تو کاغذ کاٹنے والے آلے یا قینچی سے حملہ کیا جس میں وہ زخمی ہوئے۔

یاد رہے کہ 13 نومبر کو پیرس میں ہونے والے حملوں کے بعد سے فرانس میں ہائی الرٹ ہے۔

پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ ٹیچر کو جسم اور گردن پر ضرب لگی۔

استاد کے مطابق حملہ آور نے اونی ٹوپی اور دستانے پہن رکھے تھے۔ حملہ آور سکول میں نہتا داخل ہوا تھا اور اس نے کلاس روم میں سے کاغذ کاٹنے والا آلہ یا قینچی اٹھائی۔

اس واقعے کے بعد اس شمالی مضافاتی علاقے میں پولیس نے مبینہ حملہ آور کو پکڑنے کے لیے ایک آپریشن جاری کیا تھا۔

انسداد دہشت گردی کے محکمے نے بھی قتل کرنے کی کوشش پر اپنی تحقیقات شروع کر دی تھیں۔

متعلقہ سکول میں کلاسز بھی منسوخ کر دی گئی تھیں۔

اسی بارے میں