کلمہ لکھوانے پر تنازع، سکول بند

Image caption سکول انتظامیہ کا کہنا ہے کہ آئندہ اس سبق کے دوران مختلف چیزیں سکھائی جائیں گی

امریکی ریاست ورجینیا میں جمعے کو تمام سکول بند رہے۔ ایسا جغرافیے کے ایک سبق میں اسلام کے موضوع کے شامل کیے جانے کے بعد ملک بھر سے موصول ہونے والی شکایات کے بعد کیا گیا۔

طلبا کو سبق کے دوران عربی خطاطی کرنے کو کہاگیا تھا جس پر بعض والدین کا کہنا تھا کہ یہ عقیدہ سکھانے کی کوشش ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ سکولوں کو بند رکھنے کا فیصلہ احتیاطاً کیا گیا تھا اور اس حوالے سے کوئی خطرہ موجود نہیں تھا۔

ایک ہفتہ قبل ریورہیڈ سکول کے طلبا مشرق وسطیٰ کے بارے میں پڑھ رہے تھے جس کے دوران انھیں خطاطی کرتے ہوئے کلمہ طیبہ لکھنے کو کہا گیا۔

سکول انتظامیہ کا کہنا ہے کہ آئندہ اس سبق کے دوران مختلف چیز سکھائی جائے گی۔

بعض طلبا نے یہ مشق کرنے سے انکار کر دیا تھا اور ان کے والدین کا کہنا ہے کہ یہ عقیدہ سکھانے کی ایک کوشش تھی۔ بعض والدین نے اساتذہ کی برخاستگی کا مطالبہ کیا ہے۔

آگسٹا کاؤنٹی کے سکول نے فوراً ہی اس بات کی نشاندہی کر دی تھی کہ مشرقِ وسطی کے خطے کے مذہب کے بارے میں سبق جغرافیے کے مضمون کا حصہ ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption حکام کے مطابق اس سبق میں کروائی گئی مشق کا مقصد عربی زبان کی پیچیدگی سمجھانا تھا ناکہ کسی مذہب کو فروغ دینا

تاہم بدھ تک اس حوالے سے اشتعال پھیل چکا تھا اور بڑی تعداد میں شکایات کی گئی تھیں، اس لیے سکول کے دروازے مقفل کر دیے گئے اور اس کی نگرانی کی جاتی رہی۔

جمعے تک بعض مبینہ نفرت انگیز اور توہین آمیز پیغامات کے باعث سکولوں کو بند رکھنے کا فیصلہ کیا گیا۔

حکام کا کہنا ہے کہ اس حوالے سے کوئی براہ راست خطرہ نہیں ہے لیکن قانون نافذ کرنے والے حکام اور ضلعی سکول انتظامیہ نے احتیاطاً سکول بند رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔

حکام کے مطابق اس سبق میں کروائی گئی مشق کا مقصد عربی زبان کی پیچیدگی سمجھانا تھا ناکہ کسی مذہب کو فروغ دینا۔

تاہم انھوں نے کہا کہ آئندہ ایسے سبق میں مختلف اور غیر مذہبی مثال شامل کی جائے گی۔

سکولوں کے بند کیے جانے کے فیصلہ پر بھی تنقید کی گئی۔

مقامی اخبار سے بات کرتے ہوئے مقامی لوگوں کا کہنا تھا کہ ’ایسا لگتا ہے کہ دہشت ایک بار پھر جیت گئی۔‘

اسی بارے میں