دہائیوں بعد برطانیہ میں دسمبر میں موسم معتدل

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption گزشتہ رات کئی مقامات پر کم سے کم درجۂ حرارت گیارہ سنٹی گریڈ سے نیچے نہیں گیا اور ماہرین کے مطابق موسم نسبتاً گرم رہا

برطانیہ میں ماہرینِ موسمیات نے کہا ہے کہ کئی دہائیوں میں پہلی بار ایسا ہوا کہ برطانیہ کے مغربی حصوں میں دسمبر میں موسم اتنا زیادہ معتدل رہا ہو۔

لندن کے مشرقی علاقے کینٹ میں سنیچر کو مقامی وقت کے مطابق دوپہر دو بجے درجۂ حرارت سترہ اعشاریہ ایک سنٹی گریڈ تھا جو ریکارڈ پر دسمبر کے گرم ترین دن سے محض صفر اعشاریہ چھ درجہ سنٹی گریڈ کم تھا۔

گزشتہ رات کئی مقامات پر کم سے کم درجۂ حرارت گیارہ سنٹی گریڈ سے نیچے نہیں گیا اور ماہرین کے مطابق موسم نسبتاً گرم رہا۔

تاہم شمالی انگلینڈ اور ویلز میں اب بارش کی پیش گوئی کی گئی ہے۔ سنیچر اور اتوار کے لیے ویلز میں ’محتاط رہنے‘ کا الرٹ بھی جاری کیا گیا ہے اور امکان ظاہر کیا جا رہا ہے کہ کئی مقامات پر آئندہ چوبیس گھنٹوں میں تین انچ تک بارش ہو سکتی ہے جس سے سیلاب کا امکان ہے۔

لیکن توقع ہے کہ برطانیہ کے دیگر حصوں میں درجۂ حرارت ابھی معتدل ہی رہے گا۔

بی بی سی میں موسم پر نظر رکھنے والوں نے بتایا ہے کہ جمعہ کی رات سے سنیچر کی صبح کے دوران مغربی سکاٹ لینڈ اور انگلینڈ اور شمالی آئرلینڈ میں معتدل درجۂ حرارت ریکارڈ کیا گیا۔

تاہم انگلینڈ میں دسمبر کے مہینے میں کم ترین درجۂ حرارت کا ریکارڈ انیس سو چورانوے میں قائم ہوا تھا جب شمالی یورکشائر میں ویٹبی کے مقام پر درجۂ حرارت تیرہ اعشاریہ سات رہا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

برطانیہ بھر میں مجموعی طور پر چوبیس گھنٹوں میں دسمبر کا زیادہ سے زیادہ درجۂ حرارت ہوراڈن شمالی ویلز میں انیس سو چورانوے ہی میں قائم ہوا تھا جب درجۂ حرارت پندرہ درجہ سنٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا تھا۔

اسی دوران شمال مغربی انگلینڈ میں جہاں اس مہینے کے شروع میں ڈیسمنڈ نامی طوفان کی وجہ سے باون ہزار گھروں کو سیلاب کے باعث نقصان پہنچا تھا، وہاں مزید بارش کی پیش گوئی کی گئی ہے۔ محکمۂ موسمیات کا کہنا ہے کہ اس علاقے کی زمین پہلے ہی پانی سے سیراب ہے۔

ماحولیاتی ایجنسی نے دو سیلابی وارننگ جاری کی ہیں جن کا مطلب ہے کہ وہاں طوفانی بارش ہو سکتی ہے جس کے نتیجے میں ’فوری اقدامات‘ اٹھانے پڑ سکتے ہیں۔ یہ دو مقامات شمالی انگلینڈ میں کمبریا کے کیسِک کیمپ سائٹ اور مغربی ویلز میں پونٹارگوتھی اور پونٹنی سِیوئن ہیں۔