اے بی سی میں پہلی خاتون سربراہ کی تقرری

تصویر کے کاپی رائٹ ABC
Image caption سابق میڈیا وکیل گوتھری اپریل سے مارک سکاٹ کی جگہ لیں گی

آسٹریلین براڈکاسٹنگ کارپوریشن (اے بی سی) نے گوگل کی ایگزیکٹو مشیل گوتھری کی مینیجنگ ڈائریکٹر طور پر خدمات حاصل کی ہیں۔

وہ اے بی سی کے سربراہ مارک سکاٹ کی جگہ لیں گی۔

یہ پہلا موقع ہے جب اس نشریاتی ادارے نے کسی خاتون کی اس عہدے کے لیے تقرری کی ہے۔

مشیل گوتھری سنہ 2011 میں گوگل کمپنی سے وابستہ ہوئی تھیں اور وہ فی الحال اس کے سنگاپور دفتر میں ہیں۔

اے بی سی نے کہا ہے کہ انھیں مختلف میڈیا کمپنیز میں کام کرنے کا تجربہ ہے۔ ان میڈیا کمپنیوں میں فوکس ٹیل، بی سکائی بی اور سٹار شامل ہیں۔

سابق میڈیا وکیل گوتھری اپریل سے مارک سکاٹ کی جگہ لیں گی۔

مسٹر سکاٹ جو سنہ 2006 سے اے بی سی کے سربراہ ہیں انھوں نے رواں سال نشریاتی ادارے کو چھوڑنے کا اعلان کیا تھا۔ انھوں نے اے بی سی میں نیوز 24 کا اضافہ کیا تھا اور نشریاتی ادارے کے بجٹ میں بڑی بڑی کٹوتیوں کا سامنا کیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ epa
Image caption آسٹریلوی وزیر اعظم ٹرنبل مینیجنگ ڈائرکٹر کے ساتھ اڈیٹر ان چیف کی ذمہ داری کے خلاف ہیں

مشیل گوتھری مینیجنگ ڈائریکٹر کی حیثیت سے براڈکاسٹر بورڈ کا حصہ ہوں گی اور اے بی سی کی ایڈیٹر ان چیف کی ذمہ داری بھی ان پر ہوگي۔

خیال رہے کہ اس سے قبل سابق وزیر نشریات اور موجودہ وزیر اعظم میلکم ٹرنبل نے کہا تھا کہ مینیجنگ ڈائریکٹر کے عہدے میں ایڈیٹر ان چیف کی ذمہ داری شامل نہیں ہونی چاہیے۔

مقامی میڈیا کا کہنا ہے کہ مشیل گوتھر کی تنخواہ نو لاکھ آسٹریلوی ڈالر یعنی تقریبا ساڑھے چھ لاکھ امریکی ڈالر ہوگي جوکہ مسٹر سکاٹ کی تنخواہ سے زیادہ ہے۔

اے بی سی کے چیئرمین جیمز سپائجیل مین نے کہا: ’اے بی سی بورڈ نے مقامی اور بین الاقوامی سطح پر تلاش کی بعد یہ تقرری کی ہے۔‘

مشیل گوتھری آسٹریلوی نژاد ہیں اور اطلاعات کے مطابق اے بی سی کا حصہ ہونے پر انھوں نے خوشی کا اظہار کیا ہے۔ وہ اس نشریاتی ادارے کو حقیقی طور پر آزاد سرکاری نشریاتی ادارہ کہتی ہیں۔

اسی بارے میں