فرانس میں دہشت گردی کا منصوبہ ناکام

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption وزیر داخلہ کیزنو کا کہنا تھا کہ رواں برس فرانس میں دس حملوں کو ناکام بنایا گیا ہے

فرانس کے وزیر داخلہ بیرنارکیزنو کا کہنا ہے کہ فرانس کی سکیورٹی اداروں نے ایک ایسے دہشت گرد حملے کو ناکام بنا دیا ہے جس کی منصوبہ بندی اورلینز کے قریب پولیس اور ملٹری اہلکاروں کے خلاف کی گئی تھی۔

بیرنارکیزنو کے مطابق 20 اور 24 سال کی عمر کے دو افراد مبینہ طور پر اس حملے کی منصوبہ بندی کے حوالے سے گذشتہ ہفتے گرفتار کیے گئے ہیں۔

پیرس حملوں کی تحقیقات میں مشتبہ شخص گرفتار

’پیرس کے ایک اور خودکش حملہ آور کی شناخت‘

انھوں نے مزید کہا کہ یہ دونوں افراد ایک اور شخص کے ساتھ رابطے میں تھے جن کے بارے میں خیال کیا جا رہا ہے کہ وہ اس وقت شام میں ہیں اور یہ شبہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ حملے کی منصوبہ بندی بھی اس نے ہی کی ہے۔

خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق وزیر داخلہ کیزنو کا کہنا تھا کہ رواں برس فرانس میں دس حملوں کو ناکام بنایا گیا ہے۔

واضح رہے کہ رواں برس نومبر میں فرانس کے دارالحکومت پیرس میں اسلامی شدت پسندوں کے حملے میں 130 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

گذشتہ ہفتے فرانس کے دارالحکومت پیرس میں پولیس نے 13 نومبر کو ہونے والے دہشت گرد حملوں کی تحقیقات کے سلسلے میں ایک شخص کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا تھا۔

فرانسیسی خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق پیرس حملوں کے بعد پولیس کی جانب سے ملک بھر میں تقریباً 2700 چھاپے مارے گئے ہیں جن کے بعد تین سو 60 لوگوں کو ان کے گھروں میں نظر بند کیا گیا۔

ذرائع ابلاغ کے مطابق پولیس نے شمالی فرانس میں بھی دو افراد کو گرفتار کیا تھا جن پر شبہ تھا کہ انھوں نے جنوری میں حملہ آوروں کو اسلحہ فراہم کیا تھا۔

اسی بارے میں