دس شہر مضر صحت دھند کی لپیٹ میں

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption لوگ کے لیے مضر صحت دھند کی وجہ سے سانس لینا بھی مشکل ہو گیا ہے۔

چین کے شمال مشرقی حصے کے دس شہر مضر صحت دھواں آلود دھند کی لپیٹ میں آگئے ہیں جس کے بعد صحت کے لیے خطرات میں مزید اضافہ ہو گیا ہے، جبکہ حکام کی جانب سے ہدایات جاری کی گئی ہیں کہ شہری گھروں سے نہ نکلیں۔

گذشتہ ہفتے اعلان کیا گیا تھا کہ چین کا بڑا حصے آنے والے دنوں میں فضائی آلودگی سے متاثر ہو سکتا ہے۔

چینی شہر بیجنگ کے لیے رواں ہفتے کے اختتام پر دوسری بار ریڈ الرٹ جاری کیا گیا ہے۔ اس بار جاری ہونے والے ریڈ الرٹ میں صنعتی بندرگاہ تیان جن بھی شامل ہے۔

تازہ ریڈ الرٹ کے بعد جاری ہونے والی ہدایات میں لوگوں سے کہا گیا ہے کہ وہ گھروں ہی پر رہیں، سکول بند رکھیں، اور گاڑیوں کا استعمال کم سے کم کریں۔

بدھ کی رات وزارت ماحولیات کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ جن دس شہروں کے لیے ریڈ الرٹ جاری کیا گیا ہے ان میں تیان جن اور اردگرد کے چھو ٹے شہر شامل ہیں۔

بیجنگ کے لیے جاری ہونے والے دوسرے ریڈ الرٹ کی میعاد منگل کی رات ختم ہو گئی تھی۔ وزارت ماحولیات کا کہنا تھا کہ دارالحکومت کی فضا ’آہستہ روی سے بہتر ہو رہی ہے۔‘

حالیہ برسوں میں چین میں فضائی آلودگی کی سطح میں شدید اضافہ ہوا ہے، خاص طور پر ملک کے شمال مشرق میں اہم صنعتی علاقے زیادہ متاثر ہوئے ہیں جن کا زیادہ تر انحصار کوئلے پر ہے۔

اس تنقید کے بعد کہ حکومت عوام کی صحت کے تحفظ کے لیے خاطر خواہ اقدامات نہیں کر رہی، حکام کی جانب سے صحت سے متعلق ہدایات جاری کی جا رہی ہیں، جبکہ فضائی آلودگی کی صورت حال سے نمٹنے کا بھی وعدہ کیا گیا ہے۔

اسی بارے میں