نائجیریا: گیس ڈپو میں دھماکے سے درجنوں افراد ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption یہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب بہت سے لوگ کرسمس کے روز کھانا پکانے کے لیے بوتلوں سلینڈروں میں گیس بھرانے ڈپو پہنچے تھے

جنوبی نائجیریا کی ریاست انبارا کے ایک صنعتی گيس پلانٹ میں ہونے والے دھماکے سے درجنوں افراد کے ہلاک ہونے کی اطلاعات ہیں۔

یہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب بہت سے لوگ کرسمس کے روز کھانا پکانے کے لیے سلینڈروں اور بوتلوں میں گیس بھروانے ڈپو پہنچے تھے۔

ہلاک ہونے والے افراد کی صحیح تعداد کا ابھی تک علم نہیں ہے لیکن اس میں 35 سے 100 افراد کے درمیان ہلاک ہونے کی اطلاعات ہیں۔ درجنوں افراد کو قریبی ہسپتال میں داخل کیا گیا ہے۔

متاثرین میں جہاں فیکٹری میں کام کرنے والے ملازم ہیں، وہیں کئی آس پڑوس کے لوگ بھی شامل ہیں۔

ایک عینی شاہد کے مطابق عمارت میں موجود ملازم اور گاہکوں کی لاشیں بیوٹین گیس سے اس قدر جل گئی ہیں کہ ان کی شناحت کرنا مشکل ہے۔

اطلاعات کے مطابق نیوی شہر کےگیس سٹیشن پر ایک ٹرک سے جس وقت گيس اتاری جاری تھی اس وقت ٹرک میں دھماکہ ہوا جو اتنا زوردار تھا کہ دیکھتے ہی دیکھتے وہاں آگ کے شعلے بھڑک اٹھے۔

مقامی پولیس نے اس واقعے کی تصدیق کی ہے لیکن اس کی تفصیلات فراہم نہیں کی ہیں۔ اطلاعات کے مطابق دھماکے بعد لگنے والی آگ سے بہت زیادہ نقصان ہوا ہے۔

ایک عینی شاہد کے مطابق عمارت کے اندر جھلسنے والے گاہکوں اور وہاں کام کرنے والوں کی لاشیں ناقابلِ شناخت ہیں اور یہ کہ انھوں نے درجنوں لاشیں دیکھی ہیں۔

دھماکے سے فیکٹری کے قریب واقع مکانات کو بھی نقصان پہنچا ہے۔

ریڈ کراس کے اہلکار نے بتایا کہ دھماکے کے پانچ گھنٹے بعد بھی آگ لگی ہوئی تھی، جب کہ خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پرس کے مطابق اب تک 100 لاشیں نکالی گئی ہے۔

ایک عینی شاہد نے ’وین گارڈ نیوز پیپر‘ کو بتایا ہے کہ دھماکہ اس وقت ہوا جب ٹرک والے نے ٹھنڈا ہونے کے مقررہ وقت کا انتظار کیے بغیر ہی گیس سٹیشن کو گیس دینا شروع کر دی۔

وہاں پر موجود بہت سے لوگ اس کی زد میں آگئے۔

عینی شاہدین کے مطابق دھماکے سے آگ کے زبردست شعلے اٹھے جن پر قابو پانے میں کئی گھنٹوں کا وقت لگا۔

اسی بارے میں