سنگاپور کے پرچم کے ’غلط استعمال‘ پر اسرائیل کی معافی

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اسرائیل کے سفارتخانے کا کہنا ہے کہ یہ انتہائی افسوسناک ہے

اسرائیل نے سنگاپور میں اپنے سفارتخانے کے ایک جونیئر سفارتکار کی جانب سے ایک تقریب میں سنگاپور کے قومی پرچم کو میز پوش کے طور پر استعمال کرنے پر معافی مانگی ہے۔

سفارتخانے نے اس ’افسوسناک رویے‘ کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ عملے کے ارکان کو نظم و ضبط پر سختی سے عمل کرنا چاہیے۔

احتجاجاً صدارتی محل پر زیر جامہ لہرا دیا

ٹویٹر پر یو اے ای کا جھنڈا الٹا سیدھا

مقامی میڈیا کے مطابق سنگاپور کی حکومت نے اس واقعے پر اسرائیل کے سفیر کو طلب کیا ہے۔

سنگاپور کی وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ قومی پرچم کا ’غلط استعمال‘ ایک بڑی خلاف ورزی ہے۔

اس تقریب میں جس کی میزبانی مبینہ طور پر سفارتکار کر رہے تھے سنگاپور کے پرچم کی میز پر لی جانے والی تصاویر ایک صارف نے پیر کو انٹرنیٹ پر شائع کی تھیں جن کا کہنا ہے کہ پولیس نے اس واقعے کے خلاف رپورٹ درج کر لی ہے۔

صارف نے اس تقریب کے میزبانی پر الزام لگاتے ہوئے کہا کہ ’ انھوں نے ہمارے ملک اور پرچم کا احترام نہیں کیا۔‘

اسرائیل کے سفارتخانے کا ایک بیان میں کہنا ہے کہ ’ان کے ایک جونیئر اہلکار کا اس قسم کا رویہ انتہائی افسوسناک ہے اور وہ اس پر مخلصانہ معافی مانگتے ہیں۔‘

اسی بارے میں