اسرائیل کا عرب علاقوں میں سکیورٹی مزید سخت کرنے کا انتباہ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption وزیراعظم نے کہا ہے کہ نئے پولیس سٹیشنز قائم کیے جائیں گے اور پولیس میں مزید بھرتیاں کی جائیں گی

اسرائیلی وزیراعظم بن یامین نتن یاہو نے کہا ہے کہ ملک کے عرب علاقوں میں سکیورٹی مزید سخت کی جائے گی۔

خیال رہے کہ ان کا یہ بیان گذشتہ روز تل ابیب میں مسلح شخص کے حملے میں دو افراد کی ہلاکت کے واقعے کے بعد سامنے آیا ہے۔

وزیراعظم نے سنیچر کو جائے وقوعہ کا دورہ کیا اور انھوں نے عوام سے ملک کے قانون سے وفاداری کا مطالبہ کیا۔

پولیس نے مشتبہ حملہ آور کی شناخت 29 سالہ اسرائیلی عرب کے طور پر کی ہے۔ ابھی تک اس حملے کی وجوہات کے بارے میں معلوم نہیں ہو سکا۔

تل ابیب کی بار کے باہر ہونے والے اس حملے میں سات افراد بھی زخمی بھی ہوئے تھے۔

یروشلم پوسٹ کے مطابق وزیراعظم نتن یاہو نے عرب ممالک کے سربراہان کی جانب اس حملے کی مذمت کی تعریف تو کی ہے تاہم ان کا کہنا ہے کہ اسرائیلی قانون کے نفاذ کے لیے الجليل، النقب سمیت ہر جگہ کا اقدامات کیے جائیں گے۔

اس سلسلے میں نئے پولیس سٹیشنز قائم کیے جائیں گے اور پولیس میں مزید بھرتیاں کی جائیں گی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption حملہ آور لڑکے نے اپنے والد جو کہ سکیورٹی کے امور سرانجام دیتے تھے کی گن چرائی تھی

سکیورٹی کیمرہ سے موصول ہونے والی فوٹیج سے مسلح حملہ آور نے فرار سے قبل کم ازکم 15 افراد پر گولیاں چلائیں۔

ہلاک ہونے والے دو افراد کی شناخت 26 سالہ ایلن بکال اور 30 سالہ شمن روئیمی کے نام سے ہوئی۔

ہریٹس اخبار کے مطابق حملہ آور لڑکے نے اپنے والد جو کہ سکیورٹی کے امور سرانجام دیتے تھے کی گن چرائی تھی۔

اخبار کا کہنا ہے کہ والد نے میڈیا پر چلنے والی رپورٹس میں اپنے بیٹے کو پہچان لیا اور پولیس سے رابطہ کیا۔

اسی بارے میں