لیگو کی کھلونا اینٹوں کی فروخت کی پالیسی میں تبدیلی

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption ليگو بچوں کے کھیلنے کے لیے بلڈنگ بلاکس یا اینٹیں بناتی ہے جس سے وہ مختلف قسم کی چیزیں تیار کرتے ہیں

بچوں کی کھلونا اینٹیں یا ’بلڈنگ بلاکس‘ بنانے والی معروف کمپنی لیگو نے تھوک کے حساب سے فروخت کی اپنی پالیسی تبدیل کر لی ہے اور اب خریداروں سے یہ نہیں پوچھا جائے گا کہ وہ کن مقاصد کے لیے لیگو بلاکس خرید رہے ہیں۔

پالیسی میں یہ تبدیلی چینی آرٹسٹ آئی ویئی ویئی کے حوالے سے سامنے آنے والے تنازعے کے بعد کی گئی ہے۔

گذشتہ سال اکتوبر میں آئی نے لیگو پر اس وقت سنسرشپ کا الزام عائد کیا تھا جب کمپنی نے براہ راست آئی کو لیگو کی کھلونا اینٹیں فروخت سے انکار کردیا تھا۔

کمپنی کا کہنا تھا کہ ان کے ادارے کی پالیسی کے تحت کھلونا اینٹوں کی خریداری کی درخواست اس شبہے کے تحت رد کی جاسکتی ہے کہ ان کا استعمال کسی قسم کے سیاسی خیالات کے اظہار کے لیے کیا جائے گا۔

آئی لیگو کی مدد سے سیاسی اختلاف رائے پر مشمول فن پارہ تخلیق کرنا چاہتے تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ NGV Photographic Services
Image caption آئی ویئی ويئی کے ہاتھوں بلاکس فروخت کرنے سے انکار کرنے پر دنیا بھر سے فنکاروں نے ان کی مدد کے لیے بلاکس بھیجے تھے

آسٹریلیا کے شہر میلبورن میں ہونے والی ایک نمائش کے لیے آرٹسٹ کو اُن لیگو بلاکس کے استعمال پر مجبور ہونا پڑا تھا جو لوگوں کی جانب سے انھیں عطیہ کے طور پر مہیا کیے گئے تھے۔

لیگو نے منگل کے روز اپنی ویب سائیٹ پر شائع ہونے والے بیان میں کہا ہے کہ وہ تھوک کے حساب سے لیگو خریدنے والے اپنے صارف سے ان کے استعمال کے بارے میں اس لیے سوال کرتے رہے ہیں تاکہ ان کے پراجیکٹ کی ’نوعیت‘ کے بارے میں جان سکیں۔ ان کی کمپنی نہیں چاہتی تھی کہ وہ کسی مخصوص ’ایجنڈے کا حصے بنیں یا اس کی تشہیر کا سبب بنیں۔‘

بیان میں مزید کہا گیا کہ ’تاہم ان ہدایات کو غلط فہمی کے طور پر بھی لیا جاسکتا ہے یا پھرناموافقت کے طور پر بھی دیکھا جا سکتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ لیگو گروپ، لیگو بلاکس کی بڑے پیمانے پرفروخت کے حوالے سے اپنی پالیسی میں تبدیلی لارہا ہے۔‘

رواں سال یکم جنوری سے کمپنی اپنی صارفین سے کہے گی کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ عوامی سطح کی نمائش کے موقع پر اس بات کو واضح کیا جائے کہ لیگو گروپ ان کے پروجیکٹ کی حمایت نہیں کرتا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption آئی اس کے ذریعے اپنے فن کا مظاہرہ کرتے ہیں

لیگو کی خریداری کی درخواست رد ہونے کے بعد آرٹسٹ نے شدید غصے کا اظہار کیا تھا اور کمپنی پر سنسرشپ اور امتیاز برتنے کا الزام لگایا تھا اور کہا تھا کہ کمپنی سیاسی آرٹ کی تشریح خود سے کرنے کی کوشش کررہی ہے۔

فن کار نے شنگھائی میں لیگو لینڈ بنانے کے منصوبے کو بھی کمپنی کے موقف کا سبب قرار دیا تھا۔

اس تنازعے کے بعد شدید عوامی ردعمل سامنے آیا تھا جس کے نتیجے میں دنیا بھر سے فن کار کے حمایتیوں نے انھیں کھلونا اینٹیں عطیے کے طور پر بھیجی تھیں۔

آئی نے مختلف شہروں میں ’لیگو جمع کرنے کے مراکز‘ قائم کردیے تھے اور اس تنازعے پر آزادی اظہار اور سیاسی آرٹ پر مشتمل فن پاروں کا ایک نیا سلسہ تخلیق کیا تھا۔

اسی بارے میں