اٹلی میں 28 برس بعد پہلے بچے کی پیدائش پر جشن

تصویر کے کاپی رائٹ WikimediaFrancofranco56
Image caption اٹلی کے چھوٹے شہروں اور قصبوں میں آبادی کم ہو رہی ہے

اٹلی کے شمال میں واقع ایک قصبے میں 28 برس کے بعد پہلا بچہ پیدا ہوا ہے۔

بچے کی پیدائش پر قصبے میں رویتی طور پر جشن بھی منایا گیا۔

اوستانا نامی قصبے کے میئر کے مطابق ایک مختصر سی آبادی میں نئے بچے کا آنا’ کسی خواب کا پورا ہونا‘ہے کیونکہ یہاں گذشتہ ایک سو برس کے دوران آبادی بہت کم ہو گئی ہے۔

پابلو نامی بچہ گذشتہ ہفتے تورینو کے ہسپتال میں پیدا ہوا اور اب قصبے کی مجموعی آبادی 85 افراد پر مشتمل ہے۔

میئر جاکمو کے مطابق 1900 میں ایک ہزار افراد اوستانا میں رہائش پذیر تھے تاہم دوسری جنگ عظیم کے بعد بچوں کی پیدائش کی شرح میں کمی آنا شروع ہوئی اور اصل کمی 1975 سے 1987 کے دوران آئی جب اس عرصے میں صرف 17 بچے ہوئے اور اس کے بعد اب پابلو پیدا ہوا ہے۔

اوستانا میں بچوں کی شرح پیدائش کو دوبارہ معمول پر لانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ پابلو کے والدین سلوا اور جوز نے بھی پانچ برس پہلے بیرون ملک جانے کی منصوبہ بندی کی تھی تاہم قریب کے پہاڑوں میں واقع ہوٹل کا انتظام سنبھالنے کی پیشکش کے بعد انھوں نے اپنا ارادہ ترک کر دیا۔

اٹلی کے چھوٹے قصبوں میں کم ہوتی آبادی کے مسئلے سے نمٹے کی کوشش کی جا رہی ہے کیونکہ نوجوان کام کی تلاش میں بڑے شہروں میں منتقل ہو رہے ہیں۔ ان کوششوں میں لوگوں کو خالی مکانات مفت میں دینے جیسی سہولتیں شامل ہیں۔

ایک میئر نے تو آبادی میں کمی کے مسئلے کو حل کرنے کے لیے اپنے قصبے کے رہائشیوں کے بیمار ہونے پر پابندی عائد کر دی۔

اسی بارے میں