دنیا کے ’بہترین شیف‘ کی موت

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption سنہ 1996سے جس ریستوراں میں وائیولیئر نے کام کیا اسی کے وہ سنہ 2012 میں اپنی اہلیہ کے ساتھ مالک بن گئے

سوئٹزرلینڈ کی پولیس کا کہنا ہے کہ دنیا کا بہترین ریسٹورنٹ کا درجہ پانے والے سوئس ریسٹورنٹ کے مالک شیف بونوا وائیولیئر اپنے گھر میں مردہ پائے گئے ہیں۔

44 سالہ بونوا کا ریسٹورنٹ لوزین شہر کے قریب تھا۔

ان کے ریسٹورنٹ کو ’تین مشیلین سٹار‘ ملے تھے اور فرانس کی ’لا لسٹ‘ کی جانب سے دنیا بھر کی بہترین کھانے کی جگہ کی فہرست میں سر فہرست ان کا ریسٹورنٹ تھا۔

سوئٹزرلینڈ کی پولیس نے کہا کی فرانس میں پیدا ہونے والے بونوا کے بارے میں کہا جا رہا ہے کہ انھوں نے خود کشی کی ہے۔

سوئس نیوز ویب سائٹ نے کہا کہ بونوا پیر کو پیرس میں مشیلین کی نئی گائید کے اجرا میں شرکت کرنے والے تھے۔

ان کی موت ان کے استاد کی موت کے چھ ماہ بعد سامنے آئی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption ’دنیا کے بہترین 50 ریستوراں‘ کا انعام حاصل کرتے ہوئے انھوں نے کہا تھا کہ یہ ان کے لیے ’غیر معمولی اعزاز ہے‘

اس ریسٹورنٹ میں سنہ 1996 سے کام کرنے والے بونوا سنہ 2012 میں اپنی اہلیہ کے ساتھ اس کے مالک بنے تھے۔ انھوں نے اس کے بعد سوئٹزرلینڈ کی شہریت حاصل کر لی تھی۔

وہ ایک اچھے شکاری تھے اور وہ بہت سے مخصوص قسم کے خوان تیار کرنے کے لیے مشہور تھے۔ انھوں نے گذشتہ سال شکار اور گوشت کے متعلق ایک ضخیم کتاب لکھی تھی۔

اسی بارے میں