کینیا میں تنزانیہ کا جواری ’سنگسار‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty

پولیس کا کہنا ہے کہ کینیا کے دارالحکومت نیروبی میں ایک کسینو کے دو ملازمین کو قتل کرنے پر تنزانیہ سے تعلق رکھنے والے ایک جواری کو دیگر جواریوں نے ’سنگسار‘ کر کے قتل کر دیا ہے۔

نیروبی کے پولیس سربراہ جافیھ کومے کا کہنا ہے کہ سنگسار کیے جانے والے جواری نے کسینو میں کھیلتے ہوئے تین سو ڈالر ہارے تھے لیکن جب یہ رقم واپس جیتنے کے لیے اس نے کسینو سے ایڈوانس مانگا تو کسینو نے ایسا کرنے سے انکار کر دیا جس پر اسے غصہ آگیا۔

کومے نے کہا کہ جواری کسینو سے نکل کر ایک خنجر کے ساتھ لوٹا جس کے بعد اس نے کسینو کے مینیجر اور سکیورٹی اہلکار پر حملہ کر کے انھیں قتل کر دیا۔

اس کے بعد کسینو میں موجود دیگر جواریوں نے جواری کا پیچھا کر کے ایک قریبی سڑک پر اسے پتھر مار مار کر ہلاک کر دیا۔

کینیا کے اخبار ڈیلی نیشن کے مطابق اس واقعے میں زخمی ہونے والے ایک سکیورٹی اہلکار ہسپتال میں زیراعلاج ہے اور اس کی حالت نازک بتائی جا رہی ہے۔

فرانسیسی خبر رساں ایجنسی اے ایف پی نے ایک عینی شاہد کے حوالے سے بتایا ہے کہ جواری ہارنے کے لیے تیار نہیں تھا۔

کینیا میں حالہ برسوں میں جوئے کا کاروبار مقبول ہوا ہے۔

کینیا میں ایک نجی مالیاتی ادارے پرائس واٹر ہاؤس کوپرز کے مطابق کینیا میں جوئے سے حاصل ہونے والے آمدن دو کروڑ ڈالر تھی اور اس میں سالانہ چھ فیصد اضافہ ہو رہا ہے۔

اسی بارے میں