مقبوضہ غرب اردن میں چاقو کے وار سے ایک اسرائیلی ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

اسرائیل میں حکام کا کہنا ہے کہ مقبوضہ غرب اردن میں دو نوجوان فلسطینیوں نے چاقو سے حملہ کر کے ایک اسرائیلی شخص کو ہلاک کر دیا ہے۔

بعد میں ایک مسلح شخص ن ےان 14 سالہ حملہ آوروں کو گولی مار کر زخمی کر دیا۔ جنھیں بعد میں ہسپتال منتقل کر دیا گیا۔

یہ واقعہ اسرائیل کے زیر کنٹرول صنعتی علاقے میں ایک سپر مارکیٹ میں پیش آیا ہے۔

اسرائیل کے مطابق اکتوبر 2015 سے اب تک 160 سے زائد فلسطینیوں کو ہلاک کیا جا چکا ہے جبکہ 30 اسرائیلی ہلاک ہوئے ہیں۔

اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ ہلاک ہونے والے شخص کے شناخت 21 سالہ فوجی تویا ویسمین کے نام سے ہوئی ہے جو حملے کے وقت ڈیوٹی پر نہیں تھے۔

ہسپتال ذرائع کے مطابق ایک اور اسرائیلی شخص کو بھی چاقو کے وار سے زخمی کرنے کا واقعہ پیش آیا ہے۔ جن کی حالت بہتر بتائی گئی ہے۔

ہسپتال ترجمان کا کہنا ہے کہ حملہ آوروں میں سے ایک کی حالت نازک ہے جبکہ دوسرے حملہ آور کی حالت تشویش ناک ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ شہر بن یامین صنعتی زون جمعے کو ورک پرمٹ رکھنے والے افراد کے علاوہ باقی تمام فلسطینیوں کے لیے بند ہوگا۔

فلسطینی پرتشدد واقعات میں حالیہ اضافے کے لیے اسرائیل کے غرب اردن پر مسلسل قبضے اور مشرق وسطیٰ کی امن کی کوششوں میں ناکامی کو ذمہ دار ٹھہراتے ہیں۔

جبکہ اسرائیل فلسطینی رہنماؤں اور اسلام پسند گروہوں پر تشدد کو بڑھانے کا الزام لگاتا ہے۔

حال ہی میں پیش آنے والے کئی واقعات میں نوجوان فلسطینی ملوث رہے ہیں۔

اسی بارے میں