جرمنی میں جانوروں سے سیکس پر پابندی برقرار

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption جرمن عدالت کے ججوں کے مطابق جانوروں کو تحفظ دینے کے قانون کے حق میں فیصلہ دیا

جرمنی کی آئینی عدالت نے جانوروں سے جنسی تعلق قائم کرنے پر پابندی کے خلاف دائر درخواستوں کو مسترد کر دیا ہے۔

دونوں نامعلوم درخواست گزاروں نے عدالت سے استدعا کی تھی کہ وہ جنسی طور پر جانوروں کی طرف راغب ہوتے ہیں۔

جرمن شہر کاٹزسووئر کی عدالت میں درخواست گزاروں سے موقف اختیار کیا تھا کہ عدالت اس پر غور کرے کہ آیا جانوروں سے سیکس سے ممانعت کے قوانین غیر آئینی ہیں۔

لیکن عدالت نے ان کے موقف کو مسترد کرتے ہوئے فیصلہ سنایا کہ سائل کے جنسی خودمختاری کے حق پر پابندی کے اثرات جائز ہیں۔

عدالت نے کہا کہ قانون کا جواز موجود ہے جس کے تحت جنسی حملوں کا نشانہ بننے سے بچانے کے لیے جانوروں کی دیکھ بھال کو تحفظ دینا ہے۔

جرمنی میں جانوروں کے تحفظ کے قانون کے تحت جانوروں کو زبردستی غیر فطری عمل میں شامل کرنے پر 27 ہزار سات سو ڈالر تک جرمانہ ہو سکتا ہے۔

اسی بارے میں