پاکستان، امریکہ سٹریٹیجک مذاکرات پیر کو ہوں گے

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption مذاکرات میں امریکی وفد کی قیادت امریکی سیکریٹری خارجہ جان کیری کریں گے

امریکی محکمہ خارجہ کا کہنا ہے کہ پاکستان اور امریکہ کے درمیان سٹریٹیجک مذاکرات پیر سے شروع ہورہے ہیں۔

مذاکرات میں امریکی وفد کی قیادت امریکی سیکریٹری خارجہ جان کیری کریں گے۔

سنیچر کو واشنگٹن میں پریس بریفنگ کے دوران ترجمان محکمہ خارجہ مارک ٹونر نے کہا کہ ان مذاکرات میں خطے میں امن اور استحکام سے متعلق امور زیر بحث لائے جائیں گے جبکہ تجارتی امور پر بھی بات چیت کی جائے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ مذاکرات میں خطے میں درپیش مسائل اور خطرات سمیت دہشت گردی سے نمٹنے کے بارے میں بات کی جائے گی۔

بھارتی ریاست پنجاب میں پٹھان کوٹ میں فضائیہ کے اڈے پر حملے کے بعد پاکستان کی جانب سے کالعدم جیش محمد کے خلاف کارروائی اور پاکستان بھارت تعلقات کے حوالے سے مارک ٹونر کا کہنا تھا کہ ’ہم ماضی میں بھی پاکستان اور بھارت کے درمیان تعاون کی حوصلہ افزائی کرتے رہے ہیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption امریکہ کی جانب سے ایف 16 لڑاکا طيارے فروخت کرنے پر بھارت نے ناراضی کا اظہار کیا تھا

ان کا کہنا تھا کہ دہشت گردی سے پاکستان اور بھارت دونوں ممالک کو خطرہ ہے اور اگر وہ ان معاملات کے حوالے سے آپس میں تعاون کرتے ہیں تو اسے خطے میں قیام امن کے لیے مددگار سمجھتے ہیں۔

خیال رہے کہ امریکہ اس سے قبل بھی کہہ چکا ہے کہ پاکستان کے ساتھ دفاعی تعاون امریکہ کے مفاد میں ہے اور دہشت گردی کے خاتمے کے لیے پاکستان میں جاری آپریشن سےشدت پسندوں کو نقصان پہنچا ہے۔

جبکہ امریکی وزیرخارجہ جان کیری کی جانب سے بھی پاکستان کو آٹھ ایف 16 لڑاکا طيارے فروخت کرنے کے فیصلے کا دفاع کرتے ہوئے کہا تھا کہ اگرچہ یہ ایک پیچیدہ معاملہ ہے تاہم پاکستان امریکہ کا اتحادی ملک ہے اور اس کی فوج نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں کافی ساتھ دیا ہے۔

واضح رہے کہ پاکستان کو امریکہ کی جانب سے ایف 16 لڑاکا طيارے فروخت کرنے پر بھارت نے ناراضی کا اظہار کیا تھا۔

اسی بارے میں