یومِ خواتین پر مرچوں کے سپرے کا تحفہ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption یورپی یونین کی ایک رپورٹ کے مطابق سنہ 2014 کے دوران اٹلی میں 152 خواتین قتل ہوئیں

اٹلی کی ایک میئر نے خواتین کے عالمی دن کے موقعے پر اپنے علاقے کی خواتین کو مرچوں کے سپرے تحفے کے طور پر دیے ہیں تاکہ وہ انھیں غلط ارادے سے اپنی طرف آنے والے افراد کے خلاف اسے اپنے دفاع کے طور پر استعمال کر سکیں۔

میئر توماسو فیازا دائیں بازو کی ناردرن لیگ سے تعلق رکھتی ہیں اور انھوں نے اٹلی میں خواتین کے عالمی دن کے موقعے پر روایتی پیلے پھول دینے کے بجائے تمام خواتین کو مرچوں کا سپرے دیا۔

فیازا کا کہنا تھا ’یقیناً پھول خوبصورت ہوتے ہیں لیکن کئی عورتوں کو زد و کوب کیا جاتا ہے، ان پر حملہ کیا جاتا ہے اور ان کا جنسی استحصال ہوتا ہے۔

’ہم ان کے دفاع میں ان کی مدد کرنا چاہتے تھے۔‘

اس تحفے کے اندر موجود پیغام میں درج تھا کہ ’برائی سے عورتوں کے تحفظ کے لیے ایک سادہ اور قابلِ عمل ہتھیار۔ ہم امید کرتے ہیں کہ آپ کو کبھی اسے استعمال کرنے کی ضرورت نہ پڑے۔‘

یورپی یونین کی بنیادی حقوق کے متعلق ادارے کی ایک رپورٹ کے مطابق سنہ 2014 کے دوران اٹلی میں 152 خواتین کا قتل ہوا اور 27 فیصد اطالوی خواتین کو ان کی موجودہ یا سابق ساتھیوں نے جنسی اور جسمانی تشدد کا نشانہ بنایا۔

چھ سو یورو کی لاگت سے جاری یہ مرچوں کے سپرے کی تقسیم کے تحت قصبے کی ہر عورت کو یہ سپرے فراہم کیا جائے گا۔

بعض سیاسی مخالفین نے تو یومِ خواتین پر ایسے تحفے پر تنقید کی ہے تاہم کسی شہری نے کوئی شکایت نہیں کی۔

اسی بارے میں