حملہ آور طالب علم دولتِ اسلامیہ سے متاثر تھا: ایف بی آئی

تصویر کے کاپی رائٹ UC Merced

امریکی تحقیقاتی ادارے ایف بی آئی کا کہنا ہے کہ کیلیفورنیا کی یونیورسٹی میں چار افراد پر چاقو سے حملہ کرنے والا طالبِ علم دولتِ اسلامیہ سے متاثر تھا۔

حکام کا کہنا ہے کہ 18 سالہ فیصل محمد خود ساختہ طور پر انتہا پسند ہو گیا اور اس کا کسی عسکریت پسند گروہ سے کوئی براہِ راست تعلق نہیں تھا۔

نومبر میں کیلیفورنیا کی یونیورسٹی میں حملہ کرنے کے بعد فیصل پولیس کی گولی لگنے سے ہلاک ہو گیا تھا۔

ایف بی آئی کا کہنا ہے کہ تفتیش کاروں کو فیصل کے کمپیوٹر سے دولتِ اسلامیہ کا پروپگینڈا مواد ملا ہے۔

واقعے سے ایک ہفتے قبل ہی فیصل محمد کی تحریروں سے ظاہر ہو رہا تھا کہ بہ حملے کی تیاری کر رہے ہیں۔ ان کے حملے مںی زحمی ہونے والے تمام افراد زندہ بچ گئے تھے۔

اس کے یک ماہ بعد ہی ساں برڈینو میں ایک تربیتی تقریب میں ایک جوڑے نے فائرنگ کر کے 14 افراد کو ہلاک کر دیا تھا۔

ایف بی آئی کے مطابق سید رضوان فاروق اور ان کی اہلیہ تاشفین ملک بھی دولتِ اسلامیہ سے متاثر ہو کر خود ساختہ شدت پسند بنے۔

اسی بارے میں