ایم ایچ 370: موزمبیق سے ملنے والے ٹکڑے آسٹریلیا منتقل

تصویر کے کاپی رائٹ Blaine Alan Gibson
Image caption ایک ملبے کا ٹکڑا امریکہ کے ایک غیرپیشہ ور کھوجی کو فروری میں ملا تھا

موزمبیق کے ساحل سمندر سے ملنےوالے ملبے کے دو ٹکڑوں کو معائنے کے لیے آسٹریلیا منتقل کر دیا گیا ہے، جو حادثے کا شکار ہونے والی پرواز فلائٹ ایم ایچ 370 کے ہو سکتے ہیں۔

ایک ملبے کا ٹکڑا امریکہ کے ایک غیرپیشہ ور کھوجی کو فروری میں ملا اور دوسرا ملبے کا ٹکڑا دسمبر میں جنوبی افریقہ کے ایک سیاح کو ملا ۔

مارچ 2014 کو ملائشیا ایئر لائنز کی کوالالمپور سے بیجنگ جانے والی پرواز ایم ایچ 370 لاپتہ ہوگئی تھی۔ لاپتہ ہونے والے طیارے میں 239 مسافر سوار تھے ۔

آسٹریلین ٹرانسپورٹ سیفٹی بیورو نے بی بی سی کی اس بات کی تصدیق کی ہے کہ انھیں اتوار کو موزمبیق سے ملنے والے ملبے کے ٹکڑے مل گئے ہیں اور ’ملائیشیا کی تفتیشی ٹیم کے ساتھ مل کر کام کیا جائے گا۔‘

ملائیشیا کے وزیر ٹرانسپورٹ کا کہنا ہے کہ اس بات کا ’قوی امکان‘ ہے کہ موزمبیق سے بوئنگ 777 کا ملنے والا ملبہ ملائشیا ایئرلائنز کی حادثے کا شکار ہونے والی پرواز فلائٹ ایم ایچ 370 کا ہے۔

آسٹریلیا کی سربراہی میں سمندر میں طیارہ کی تلاش کی جا رہی ہے کیونکہ شبہہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ حادثہ سمندر کے اس حصے میں ہوا ہے جوآسٹریلیا کے قریب ہے۔

بوئنگ کے ماہرین تفتیشی کام میں مدد دے رہے ہیں۔

جس جگہ سے یہ ٹکڑا ملا ہے وہ ملبے کے سمندری بہاؤ کے ساتھ مماثلت رکھتا ہے جو یہ شاید دکھا پائے کہ ایم ایچ 370 سے ٹوٹے پھوٹے حصے کس جگہ سے آئے جس سے حادثے کی ممکنہ جگہ کی نشاندہی ہو سکتی ہے۔

اسی بارے میں