مشرقی یورپ میں تعینات امریکی فوج میں اضافے کا فیصلہ

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption گذشتہ ماہ پینٹاگون نے سال 2017 میں یورپی دفاع کے لیے اپنے بجٹ میں چار گنا اضافہ کرنے کا اعلان کیا تھا

امریکی فوج کا کہنا ہے کہ وہ روس کے جارحانہ رویے کے باعث مشرقی یورپ میں اپنے فوجیوں کی تعداد میں اضافہ کر رہا ہے۔

اگلے سال سے امریکہ کے تین جنگی بریگیڈ اس علاقے میں تعینات کیے جائیں گے۔

* یوکرینی پائلٹ کو روس میں 22 سال قید کی سزا

بی بی سے نامہ نگار برائے سفارتی امور کا کہنا ہے کہ یوکرین میں روسی اقدامات کے بعد خطے میں پیدا ہونے والی کشیدگی کے بعد سے یہ نیٹو کی سب سے بڑی کمک ہے۔

گذشتہ ماہ پینٹاگون نے سال 2017 میں یورپی دفاع کے لیے اپنے بجٹ میں چار گنا اضافہ کرنے کا اعلان کیا تھا۔

اس اضافی نفری سے امریکہ خطے میں فوجی مشقیں کرنے کے قابل ہو جائے گا۔

یورپ میں امریکہ کے سینیئر کمانڈر جنرل فلپ بریڈ لو کا کہنا تھا ہمارے اتحادی مزید قابل ہوں گے۔ ان کے ممالک میں مزید مسلح بریگیڈ اور جدید اسلحے ہوں گے۔

ہر بریگیڈ علاقے میں نو ماہ کے بعد جگہ تبدیل کرے گی۔ ہر بریگیڈ میں 4500 فوجی اہلکار بشمول فوجی سازو سامان اور گاڑیاں ہوتے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption ہر بریگیڈ علاقے میں نو ماہ کے بعد جگہ تبدیل کرے گی اور ہر بریگیڈ میں 4500 فوجی اہلکار ہوں گے

نائب وزیرِ خارجہ نے وال سٹریٹ جرنل کو بتایا کہ ان میں ایسے ڈویژن بھی شامل ہیں جو کسی واقعے کی صورت میں جنگ کی صالحیت رکھتے ہیں۔‘

یورپ اور روس کے درمیان تعلقات اس وقت سے کشیدہ ہیں جب سے روس نے یوکرین کے خطے کرائمیا کی 2014 میں دوبارہ الحاق میں مدد کی۔

اس مداخلت سے خطرہ پیدا ہو گیا کہ روس شاید ہمسایہ ریاستوں میں در اندازی کا ارادہ رکھتا ہے۔

برطانیہ کے وزیرِ خارجہ فلپ ہیمنڈ نے خبر رساں ادارے روئٹرز کو بتایا کہ گذشتہ چند ماہ میں یوکرین میں صورتحال خراب ہوئی ہے اور کئی بار جنگ بندی کی مخالفت کی گئی۔

ر وس نے نیٹو اتحاد پر الزام لگایا ہے کہ وہ یوکرین کی صورتحال کا فائدہ اٹھا کر روس کی سرحد کے قریب تر ہو رہا ہے۔

روسی کے نائب وزیرِ دفاع ایناتولی اینتونوف کا کہنا تھا کہ ’ایسی خبریں پھیلائی جار ہی ہیں کہ روس خطۂ بلقان کی ریاستوں میں اپنے ٹینک بھیج رہا ہے۔ کوئی بھی ایسی نہیں کر رہا۔‘

بعض مبصرین کا کہنا ہے کہ امریکی فوج کی تعیناتی کا منصبوہ شاید اوباما اقتدار کے بعد کے دور کے لیے ہے۔

امریکہ میں ری پبلیکنز کے صدارتی امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ نے امریکی کی خارجہ پالیسی پر آنے والی لاگت پر سخت تنقید کی ہے۔

اسی بارے میں