دبئی میں برج خلیفہ سے بھی بلند عمارت کا منصوبہ

Image caption یہ 828 میٹر اونچے برج خلیفہ سے ’تھوڑا‘ اونچا ہی ہوگا

دبئی میں ایک نئے تعمیراتی منصوبے کے اعلان کے مطابق شہر کے مرکز میں ایک نئی عمارت تعمیر کی جائے گا جودنیا کی موجودہ بلند ترین عمارت ’برج خلیفہ‘ سے بھی بلند ہوگی۔

عمار پراپرٹیز نے ابھی یہ نہیں بتایا ہے کہ مجوزہ عمارت کی انچائی کیا ہو گی، تاہم ان کا کہنا ہے کہ یہ 828 میٹر اونچے برج خلیفہ سے ’تھوڑا‘ اونچا ہی ہوگی۔

عمار پراپرٹیز کے مطابق ان کے اس منصوبے پر ایک ارب ڈالر خرچ ہوں گے اور یہ عمارت سنہ 2020 میں دبئی ایکسپو میلے تک تیار ہو جائے گی۔

اس عمارت میں رہائشی فلیٹوں کے علاوہ ایک ہوٹل اور وسیع چھت بھی ہوگا۔

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption نئے منصوبے کا اعلان اسی کپمنی نے کیا ہے جس نے برج خلیفہ تعمیر کیا تھا

خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کا کہنا ہے کہ اس عمارت کا ڈیزائن معروف ماہرِ تعمیرات سینتیاگو کالاتروا والز نے بنایا ہے جس میں دھات کی بڑی بڑی تاروں کے ایک پیچیدہ نظام کو استعمال کیا جائے گا۔

تاروں کے اس ڈیزائن کی وجہ سے توقع کی جا رہی ہے کہ برج خلیفہ سے اونچا ہونے کے باوجود اس عمارت کو دنیا کی بلند ترین عمارت نہیں سمجا جائے گا۔

دوسری جانب سعودی عرب کے شہر جدہ میں بھی ایک بلند ٹاور زیر تعمیر ہے جس کی بلندی ایک کلومیٹر ہو گی جو کہ برج خلیفہ سے زیادہ ہو گی۔ ’کِنگڈم ٹاور‘ نامی اس مینار کی تعمیر منصوبے کے مطابق سنہ 2020 تک مکمل ہو جائے گی اور یہ دنیا کی بلند ترین عمارت ہوگی۔

Image caption دبئی کی شناخت برج خلیفہ اس وقت دنیا کا بلند ترین ٹاور ہے

عمار پراپرٹیز کا کہنا ہے کہ مجوزہ مینار ساحل سمندر کے قریب جاری تعمیرات کا مرکزی نکتہ ہوگا اور اس میں ریستورانوں کے علاوہ شہر اور سمندر کے نظارے کے لیے مخصوص سہولیات بھی ہوں گی۔

یاد رہے کہ عمار پراپرٹیز کے اس منصوبے کو دبئی کی حکومت کی سرپرستی حاصل ہے جس کے تحت ادارہ ایسے منصوبوں پر کام کر رہا ہے جنھیں ماہرین تعمیرات کے شعبے میں غیر سرکاری کمپنیوں کے کردار میں اضافے تعبیر کر رہے ہیں۔

اسی بارے میں